Sunday , May 27 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت پر 1.35 لاکھ کروڑ روپئے کا قرض

حکومت پر 1.35 لاکھ کروڑ روپئے کا قرض

مرکز سے 8440 کروڑ روپئے کا قرض حاصل ، وزیر فینانس کا بیان
حیدرآباد ۔ 7۔ نومبر (سیاست نیوز) وزیر فینانس ای راجندر نے کہا کہ ریاستی حکومت پر ایک لاکھ 35 ہزار 554 کروڑ روپئے کا قرض ہے اور مالیاتی سال 2016-17 ء میں ریاستی خزانہ پر سود کا بوجھ 8609 کروڑ ہیں۔ قانون ساز کونسل میں وقفہ سوالات کے دوران کانگریس کے رکن پی سدھاکر ریڈی کے سوال پر وزیر فینانس نے بتایا کہ مرکزی حکومت سے 8440 کروڑ 12 لاکھ روپئے قرض حاصل کیا گیا جبکہ دیگر مالیاتی اداروں سے 14044 کروڑ 94 لاکھ کا قرض حاصل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی ریاست اپنی مرضی مطابق قرض حاصل نہیں کرسکتی۔ قرض حاصل کرنے کیلئے مرکزی حکومت کے مقرر کردہ قواعد کی پابندی ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ حکومت نے دیگر ریاستوں کے مقابلہ کم شرح سود پر قرض حاصل کیا ہے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ اگرچہ ریاست کا مجموعہ قرض ایک لاکھ 35 ہزار کروڑ ہیں لیکن تشکیل تلنگانہ کے باعث ٹی آر ایس حکومت نے صرف 65 ہزار کروڑ کا قرض حاصل کیا جس میں 20 ہزار کروڑ کالیشورم پراجکٹ اور 40 ہزار کروڑ مشن بھگیرتا اسکیم کیلئے حاصل کئے گئے تاکہ گھر گھر پینے کا پانی سربراہ کیا جاسکے۔ وزیر فینانس نے تلنگانہ حکومت کی جانب سے ضرورت سے زیادہ قرض حاصل کرنے کے الزامات کو مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت عوام کی خواہش کے مطابق پراجکٹس اور فلاحی اسکیمات پر عمل کر رہی ہے ۔ انہوں نے پراجکٹ کی تکمیل کے سلسلہ میں مالیاتی دشواریوں کا حوالہ دیا۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ تمام طبقات کی بھلائی کے اقدامات کر رہے ہیں۔ انسانی وسائل کی ترقی اہم ترجیح ہے۔ اسی کے تحت مختلف طبقات کے لئے اقامتی اسکولس قائم کئے گئے ۔ اقلیتوں کیلئے 200 اقامتی اسکول قائم کئے گئے ہیں۔ کانگریس کے رکن پی سدھاکر ریڈی نے کہا کہ ریاست پر قرض کا بوجھ دیڑھ لاکھ کروڑ تک پہنچ چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ریاست کی معاشی صورتحال بہتر ہے تو پھر آبپاشی پراجکٹ کے بلز کیوں ادا نہیں کئے جارہے ہیں۔ فیس ری ایمبرسمنٹ کے تحت لاکھوں طلبہ کو رقم کی اجرائی سے محروم کیوں رکھا گیا ہے ۔ انہوں نے ریاست کی معاشی صورتحال پر حکومت سے وضاحت کا مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT