Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت کی غفلت سے ریت مافیا کے حوصلے بلند ‘ گورنر مداخلت کریں

حکومت کی غفلت سے ریت مافیا کے حوصلے بلند ‘ گورنر مداخلت کریں

چیف منسٹر کے افراد خاندان کے ریت مافیا سے تعلقات کا الزام ۔ کانگریس قائدین کے وفد کی گورنر نرسمہن کو یادداشت
حیدرآباد /5 جنوری ( سیاست نیوز ) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اُتم کمار ریڈی کی قیادت میں کانگریس کے ایک وفد نے راج بھون پہونچکر گورنر نرسمہن سے ملاقات کی اور ریت مافیا کی غیر قانونی سرگرمیوں کو روکنے کیلئے مداخلت کرنے کی اپیل کی ۔ کاماریڈی میں ریت مافیا کے ہاتھوں قتل ہونے والے سائیلو کے ارکان خاندان کو 25 لاکھ روپئے ایکس گریشیا فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ وفد میں قائدین اپوزیشن کے جاناریڈی ( اسمبلی ) محمد علی شبیر ( کونسل ) سابق مرکزی وزیر سروے ستیہ نارائنا سابق ریاستی وزراء ڈی ناگیندر ، ڈی کے ارونا ، سابق ارکان پارلیمنٹ ، انجن کمار یادو ، ملو روی ، رکن اسمبلی سمپت کمار ترجمان اعلی پردیش کانگریس کمیٹی ڈاکٹر شراون و دیگر موجود تھے ۔ اتم کمار ریڈی نے گورنر کو یادداشت پیش کی اور بتایا کہ ریت مافیا نے 36 سالہ سائیلو کا قتل کردیا جو غیر قانونی طور پر ریت کی منتقلی میں رکاوٹ بن رہا تھا ۔ انہوں نے کنٹراکٹر کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرکے اعلی سطحی تحقیقات کرانے اور سائیلو کے ارکان خاندان کو 25 لاکھ روپئے ایکس گریشیا فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس نے گورنر کو بتایا کہ ریت مافیا کا جال ساری ریاست میں پھیل چکا ہے ۔

حکومت کی غفلت و تساہل سے ریت مافیا کروڑہا روپئے کی لوٹ کھسوٹ کر رہا ہے ۔ حکومت کی جانب سے کوئی کارروائی نہ کرنے سے ان کے حوصلے بلند ہوچکے ہیں اور وہ اپنی غیر قانونی سرگرمیوں کو تیزی سے فروغ دے رہے ہیں ۔ چند ماہ قتل نیرلہ ضلع سرسلہ میں بھی ریت مافیا نے 8 ایس سی ، ایس ٹی اور بی سی افراد کو پولیس کی مدد سے مارپیٹ کی تھی ۔ ستم ظریفی یہ رہی کہ پولیس نے خاطیوں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے غریب پسماندہ طبقات کے افراد کو ہی جیل روانہ کیا تھا ۔ کانگریس پارٹی نے چیف منسٹر کے سی آر کے ارکان خاندان کے ریت مافیا سے تعلقات ہونے کے کئی ثبوت پیش کرکے انکا اصلی چہرہ منظر عام لایا تھا لیکن ان کے خلاف آج تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے کہا کہ ریاستی وزیر کے ٹی آر عالمی امور پر ٹوئیٹ کرکے ردعمل کا اظہار کرتے ہیں مگر افسوس کی بات یہ ہے کہ انہوں نے کاماریڈی میں کل ریت مافیا کی جانب سے قتل کرنے پر کوئی ٹوئیٹ نہیں کیا ۔ غیر قانونی ریت کی منتقلی سے ریت کی قیمتوں میں زبردست اضافہ ہو رہا ہے ۔ پہلے 15 ہزار روپئے میں ایک لاری ریت دستیاب تھی اب اس کی قیمت بڑھ کر 60 ہزار روپئے تک پہونچ گئی ہے ۔ ان غیر قانونی سرگرمیوں سے ریاست کی آمدنی متاثر ہو رہی ہے ۔ جو چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر سے قریب ہیں وہی ریاست کے وسائل لوٹ رہے ہیں اور حکومت تماشائی بنی ہوئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT