Sunday , November 18 2018
Home / شہر کی خبریں / حکومت کی کارکردگی سے تمام طبقات خوش اور مطمئن

حکومت کی کارکردگی سے تمام طبقات خوش اور مطمئن

شادی مبارک اسکیم کی رقم ایک لاکھ کرتے ہوئے اقلیتوں سے اظہار ہمدردی ، فاروق حسین کا بیان
حیدرآباد۔20مارچ(سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت حکومت میں تیز رفتار ترقی کی منزلیں طئے کر رہی ہے اور ریاستی وزراء بالخصوص مسٹر کے ہریش راؤ ریاستی کی ہمہ جہت ترقی میں شب و روز مصروف ہے۔ حکومت تلنگانہ نے ریاست میں اقلیتوں کے بجٹ میں زبردست اضافہ کرتے ہوئے سنہرے تلنگانہ کی سمت اہم پیشرفت کی ہے۔ جناب محمد فاروق حسین رکن قانون ساز کو نسل نے تلنگانہ قانون ساز کونسل میں جاری بجٹ 2018-19 پر مباحث کے دوران یہ بات کہی ۔ انہو ںنے چیف منسٹر کو اقلیتوں کا ہمدرد قائد قرار دیتے ہوئے کہا کہ شادی مبارک اسکیم میں بغیر کسی توجہ دہانی اور بغیر کسی نمائندگی کے مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے شادی مبارک میں فراہم کی جانے والی رقم کو ایک لاکھ 116 روپئے تک بڑھادیا ہے۔ جناب محمد فاروق حسین نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ ریاست تلنگانہ میں حکومت کی کارکردگی سے تمام طبقات مطمئن ہیں اور بجٹ میں تمام طبقات کی ترقی و خوشحالی کو یقینی بنانے کے اقدامات کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے تلنگانہ میں چلائے جانے والے مشن کاکتیہ منصوبہ کو ملک بھر میں منفرد قراردیتے ہوئے کہاکہ اس پروگرام کو عملی جامہ پہنانے کیلئے حکومت کی جانب سے ریاستی وزیر آبپاشی مسٹر ہریش راؤ شب و روز مصروف ہیں اور راتوں میں پراجکٹ کے کاموں کا جائزہ لے رہے ہیں۔ تلنگانہ راشٹر سمیتی رکن قانون ساز کونسل نے بتایا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے اقلیتوں کے لئے چلائی جانے والی اسکیمات میں شادی مبارک‘ اقلیتی اقامتی اسکول اور دیگر اسکیمات کے علاوہ ٹی ایس پرائڈ کے طرز پر شروع کی جانے والی اسکیم ٹی ایس پرائم کے اعلان سے اس بات کی توقع کی جا سکتی ہے کہ ریاست میں اقلیتوں کی معاشی بدحالی کو دور کرنے کے لئے مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے منظم حکمت عملی تیار کی ہوئی ہے۔ انہوں نے اپنی تقریر کے دوران کونسل کے دیگر ارکان کو مشورہ دیا کہ وہ ریاست کے مختلف اضلاع میں چلائے جانے والے 204اقلیتی اقامتی اسکولوں کا دورہ کرتے ہوئے ان اسکولوں میں تعلیم حاصل کرنے والے بچوں سے ملاقات کریں اور ان کے سرپرستوں کی صورتحال سے آگہی حاصل کریں ۔ انہو ںنے اردو اکیڈمی کے اوپن اسکولوں کی ازسر نو کشادگی کو یقینی بنانے کے اقدامات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت سے وہ اس بات کی خواہش کرتے ہیں کہ ریاستی سطح پر اردو کی ترقی و ترویج کیلئے اردو اوپن اسکولوں کی کشادگی عمل میں لائے تاکہ اردو کا فروغ ہو سکے۔جناب فاروق حسین نے قانون ساز کونسل میں جاری مباحث کے دوران انیس الغرباء ‘ تلنگانہ اسلامک کلچرل کنونشن سنٹر‘ جامعہ نظامیہ آڈیٹوریم‘ جامعہ نظامیہ کے اسنادات کو مسلمہ حیثیت کی فراہمی پر چیف منسٹرمسٹر کے چندرا شیکھر راؤ سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت اقلیتوں کے مفادات کے تحفظ کے علاوہ ریاست میں امن و امان کی برقراری کے لئے سرگرم عمل ہے۔ جناب محمد فاروق حسین نے ریاست گیر سطح پر اراضیات کے سروے کے سلسلہ میں حکومت کے اقدام کو مثالی قرار دیتے ہوئے کہا کہ 100 سال سے زائد عرصہ گذرنے کے بعد ریاست میں اراضیات کا سروے کیا جا رہاہے اور آزاد ہندستان میں کسی بھی حکومت نے اراضیات کے ریکارڈ سک وپاک و شفاف بنانے کے لئے اس طرح کے وسیع و عریض سروے کو یقینی بنانے کی جرأت نہیں کی بلکہ ریاست دکن حیدرآباد میں سلطنت آصفیہ کے دور حکمرانی کے بعد کے سی آر کے دور حکومت میں ہی اراضیات کا سروے کیا جا رہا ہے ۔جناب سید امین الحسن جعفری رکن قانون ساز کونسل نے بھی بجٹ مباحث میں حصہ لیا اور اپنا تحریری خطاب صدرنشین کونسل مسٹر سوامی گوڑ کے حوالہ کیا اور کہا کہ بجٹ کی تخصیص سے و مطمئن ہیں اور حکومت تلنگانہ کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کی ستائش کرتے ہیں ۔ انہوں نے ناسازیٔ صحت کی بناء پر تقریر سے اغراض کیا اور تحریری تقریر کرسی ٔ صدارت کے حوالہ کردی۔

TOPPOPULARRECENT