Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت کے اراضی سروے پر خدشات

حکومت کے اراضی سروے پر خدشات

اوقافی اراضیات کے تحفظ کیلئے ڈپٹی چیف منسٹر سے نمائندگی
حیدرآباد ۔ 26 ۔ ستمبر : ( پریس نوٹ ) : جناب سید عزیز پاشاہ سابق ایم پی کی قیادت میں ایک کل جماعتی وفد نے آج جناب محمود علی ڈپٹی چیف منسٹر حکومت تلنگانہ اور چیف سکریٹری سے ملاقات کی اور ان کی توجہ اس امر کی طرف مبذول کروائی کہ حکومت کا مجوزہ اراضی کا سروے کے دوران اس بات کا قوی خدشہ کا احتمال ہے کہ وقف اراضی جو تقریبا 5800 سروے نمبرات کے تحت درج رجسٹر ہیں اس میں سے تقریبا 80 فیصد اراضیات پر ناجائز قبضہ ہوجائے گا ۔ وفد کے ارکان نے زور دیا کہ اضلاع کے کلکٹرز کو ہدایت دی جائے کہ زمینی عملے کو سختی سے پابند کیا جائے کہ وہ سروے کے وقت تمام متعلقہ عملے اور ریکارڈ کے ساتھ حاضر رہیں ۔ وفد کے ارکان نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ وقف بورڈ کے عملے کی تعداد میں اضافہ کیا جائے ۔ وفد میں مسرز حامد حسین خاں امیر جماعت اسلامی تلنگانہ اڈیسہ جناب عثمان شہید ایڈوکیٹ صدر آل انڈیا مسلم فرنٹ ، جناب عثمان الہاجری صدر وقف پروٹکشن سوسائٹی کے علاوہ حسب ذیل افراد شریک تھے ۔ محمد عباس صدر تنظیم آواز تلنگانہ ، مسٹر وینکٹ سٹی سکریٹری ممبر سی پی آئی ایم ، جناب ظہور خالد ، کریم نگر ، حافظ مولانا عبداللہ بانعیم ، جناب محمد امتیاز بھونگیر ، شیخ ندیم اے آئی وائی ایف ، حافظ عبدالعظیم مجاہد پور ، مقبول الہاجری ، محمد اشتاق ، محمد مقصود علی اندول ، محمد بن عثمان الہاجری کے علاوہ دیگر احباب موجود تھے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے وفد کا استقبال کیا اور تیقن دیا کہ سروے میں کوئی غلطی کا امکان نہیں ہے انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر صاحب اس سلسلے میں بہت دلچسپی لے رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT