Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حکومت کے بلند بانگ دعوے ، عملی اقدامات کھوکھلے

حکومت کے بلند بانگ دعوے ، عملی اقدامات کھوکھلے

برقی شٹ ڈاؤن پر خاموش تماشائی ، روزہ داروں کو شدید تکالیف
حیدرآباد۔9جون (سیاست نیوز) محکمہ برقی کی جانب سے بلا وقفہ برقی سربراہی کے اقدامات کے اعلان کے باوجود شہر میں برقی منقطع ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔شہر کے کئی علاقوں میں رات دیر گئے برقی سربراہی متاثر رہی لیکن کوئی پرسان حال نہیں تھا اور نہ ہی اعلی عہدیدار فون اٹھا رہے تھے۔ دونوں شہروں میں بلا وقفہ برقی سربراہی کو یقینی بنانے کے دعوے کھوکھلے ثابت ہو رہے ہیں اس کے باوجود بھی حکومت کے کوئی ذمہ دار عہدیدار کی جانب سے حقیقی وجوہات کا جائزہ لینے کیلئے اقدامات نہیں کئے جا رہے ہیں جو کہ عوام کیلئے انتہائی تکلیف کا باعث ہے۔ دو یوم قبل ڈپٹی چیف منسٹر کی جانب سے جائزہ اجلاس منعقد کیا گیا تھا لیکن اس اجلاس میں محکمہ برقی اعلی عہدیداروں کو طلب نہ کئے جانے سے اجلاس کی اہمیت باقی نہیں رہی بلکہ وہ اجلاس محکمہ اقلیتی بہبود کے اجلاس کی طرح ہو گیا۔ ریاستی حکومت کی جانب سے شہری علاقوں میں بلا وقفہ برقی سربراہی کے انتظامات کو یقینی بنانے کے اعلانات کئے جا تے ہیں لیکن ماہ رمضان المبارک کے دوران بھی جبکہ اقلیتی غالب آبادیوں کی سرگرمیوں میں اضافہ ہو جاتا ہے وہاں بھی بلا وقفہ برقی سربراہ نہ کیا جانا افسوسناک ہے۔ سعیدآباد کے علاقہ میں جہاں صدرنشین ٹی ایس ایس پی ڈی سی ایل کا مکان موجود ہے اس علاقہ میں بھی رات دیر گئے برقی سربراہی منقطع ہو گئی شائد صدرنشین کو اس بات کا علم بھی نہ ہوا ہوگا چونکہ محکمہ برقی کے عہدیدار اپنے اعلی افسران کے آرام کا مکمل خیال رکھتے ہیں۔ شہر حیدرآباد کے مختلف علاقوں با لخصوص پرانے شہر میں برقی سربراہی منقطع نہ ہو اس کے لئے اقدامات کی ہدایات جاری کی جا رہی ہیں لیکن کوئی عہدیدار یہ بتانے سے قاصر ہے کہ آخر کیوں برقی سربراہی میں خلل پیدا ہو رہا ہے۔ 8جون کی شب پرانی حویلی ‘ چھتہ بازار ‘ دیوان دیوڑھی ‘ نیا پل کے علاوہ انجن باؤلی ‘ فلک نما ‘ کالا پتھر کے علاقوںم یں بھی برقی سربراہی مسدود رہی لیکن ان علاقوں کے عوام کا کوئی پرسان حال نہیں تھا اور نہ ہی ان علاقوں میں فوری برقی بحالی کے کوئی اقدامات کئے گئے۔ پرانے شہر کیلئے محکمہ برقی کی جانب سے کنٹرول روم کے قیام کا اعلان تو کردیا گیا لیکن معیاری برقی سربراہی کے اقدامات کے سلسلہ میں کوئی کارکردگی نہیں دیکھی جا رہی ہے۔ محکمہ برقی کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ماہ رمضان المبارک کے دوران برقی قمقموں سے کی جانے والی سجاوٹ اور اضافی روشنیوں کے سبب ان پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ محکمہ کے عہدیداروں کی جانب سے یہ کہا جانا اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالتے ہوئے عوام کو مورد الزام ٹہرانے کی کوشش کرنا ہے۔ عوام اور تاجرین کا کہنا ہے کہ محکمہ برقی کے عہدیدار غیر قانونی و غیر مجاز برقی استعمال کرنے والوں کے خلاف کاروائی کریں لیکن حقیقی صارفین کو بلا وقفہ برقی سربراہی کو یقینی بنایا جائے۔

TOPPOPULARRECENT