Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / حکومت ہند ، بات چیت کیلئے سنجیدہ نہیں : سرتاج عزیز

حکومت ہند ، بات چیت کیلئے سنجیدہ نہیں : سرتاج عزیز

پیشگی شرائط کے بغیر قومی سلامتی مشیران کی مذاکرات کیلئے ہم تیار ، پاکستانی این ایس اے کا بیان

اسلام آباد ۔ 22 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان پر بھاری ذمہ داری عائد کرتے ہوئے پاکستان نے آج کہا کہ وہ کسی پیشگی شرائط کے بغیر قومی سلامتی مشیران سطح کی بات چیت کیلئے تیار ہیں ۔ ہندو پاک کے درمیان ان مذاکرات پر غیریقینی کے بادل چھانے کے درمیان پاکستان نے اپنے موقف کو واضح کردیاہے ۔ قومی سلامتی مشیر پاکستان سرتاج عزیز نے جو کل نئی دہلی کیلئے روانہ ہونے والے ہیں جہاں وہ اپنے ہندوستانی ہم منصب اجیت ڈویول سے ملاقات کریں گے ۔ اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ پروگرام کے مطابق ہندوستان کا دورہ کرنے تیار ہیں لیکن یہ دورہ کسی پیشگی شرائط کے بغیر ہوگا ۔ انھوں نے حکومت ہند پر شدید تنقید کی کہ وہ اس بات چیت کیلئے سنجیدہ نہیں ہے ۔ اس کا اصرار ہے کہ ہم نئی دہلی میں کشمیری علحدگی پسند قائدین سے ملاقات نہ کریں۔ انھوں نے کہا کہ پاکستانی ہائی کمیشن میں کل ان کیلئے ( کشمیری علحدگی پسند قائدین ) ملاقات کا اہتمام کیا گیا ہے اور اس ملاقات پر حکومت ہند اپنا کنٹرول دکھانا چاہتی ہے ۔ ہند ۔ پاک مذاکرات کی منسوخی کا فیصلہ ابھی نہیں ہوا ہے ۔ دونوں جانب سے کوئی توثیق نہیں کی گئی کہ یہ بات چیت ہوگی لہذا ہم اپنے مقررہ وقت پر کسی پیشگی شرط کے بات چیت کرنے تیار ہیں ۔ حکومت ہند کے رویہ سے ظاہر ہورہا ہے کہ اس نے علحدگی پسند حریت قائدین کے تعلق سے اپنے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں لائی ہے۔

اس کا کہنا ہے کہ ہند ۔ پاک بات چیت میں ان کا کوئی رول نہیں ہے ۔ ایسے میں قومی سلامتی مشیران کی بات چیت کا امکان موہوم دکھائی دیتا ہے ۔ ہندوستان کے موقف کا آج دوپہر کے بعد ہی اس وقت پتہ چلے گا جب وزیر خارجہ سشما سوراج نئی دہلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کریں گی ۔ سرتاج عزیز نے ہندوستان کے رویہ پر اپنے ردعمل میں کہا کہ اس سچائی سے منہ نہیں پھیرا جاسکتا کہ وزیر خارجہ سشما سوراج نے جو بیان دیا ہے وہ غلط ہے کہ پاکستان اس کے مقام اوفا میں طئے پائے ایجنڈہ سے منحرف ہونے کی کوشش کررہا ہے اور اس بات چیت کیلئے نئے شرائط عائد کردیا ہے ۔ وزار ت خارجہ ہند کا بیان ہے کہ پاکستان نے اوفا بیان کے آخری فقرے کو یکسر نظرانداز کردیا ہے کہ اس پر نئے شرائط عائد کئے گئے ہیں ۔ ہندوستانی ہائی کمیشن کے حوالے کردہ نوٹ میں یہ واضح کردیا گیا ہے کہ پاکستان کی پیشگی شرائط کے بغیر این ایس اے سطح کی بات چیت کیلئے تیار ہے ۔

سرتاج عزیز نے وزارت خارجہ کے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ درحقیقت یہ ہندوستان ہی ہے جس نے پاکستان پر نئی شرائط نافذ کئے ہیںکہ ہم حریت قائدین سے ملاقات نہیں کرسکتے جبکہ ہائی کمشنر کے استقبالیہ کیلئے تیار کردہ مہمانوں کی فہرست میں ان کشمیری حریت قائدین کے نام شامل ہیں۔ دونوں جانب اپنے موقف پر نرمی اختیار کرنے کیلئے تیار نہیں ہیں اور بات چیت کیلئے ایجنڈہ پر ہی اپنا موقف برقرار رکھے ہوئے ہیں ۔سرتاج عزیز کے ساتھ ملاقات کیلئے حریت قائدین کو مدعو کیا گیا ہے ۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہاکہ پاکستان تمام حل طلب مسائل کی یکسوئی کیلئے ہندوستان سے بات چیت کرنا چاہتا ہے اور یہ بات چیت کشمیر کے اہم مسئلہ کے بغیر نہیں ہوگی ۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان نے 3نکاتی ایجنڈہ تیار کیا ہے ۔اس میں دہشت گردی کا مسئلہ بھی شامل ہے ۔ اوفا میں جو فیصلہ کیا گیا تھا اسی بنیاد پر بات چیت کا ایجنڈہ مرتب کیا گیا ہے ۔ کشمیر کے بشمول تمام دیرینہ مسائل پر تبادلہ خیال کیلئے زور دیا گیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT