Saturday , December 15 2018

حکومت 55 روپئے تک بھی واپس لانے میں ناکام: کانگریس

نئی دہلی۔ 29 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومت کو غیرملکی بینکوں میں کھاتے رکھنے والے تمام افراد کے ناموں کا برسرعام اعلان کرنے کا چیلنج کرتے ہوئے کانگریس نے آج بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ انتخابی مہم کے دوران اس سوال پر عوام کو ’’بیوقوف‘‘ بنا رہی تھی۔ کانگریس نے بی جے پی کو یاد دہانی کی کہ کالادھن واپس لانے کے انتخابی وعدہ کا کیا ہو

نئی دہلی۔ 29 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومت کو غیرملکی بینکوں میں کھاتے رکھنے والے تمام افراد کے ناموں کا برسرعام اعلان کرنے کا چیلنج کرتے ہوئے کانگریس نے آج بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ انتخابی مہم کے دوران اس سوال پر عوام کو ’’بیوقوف‘‘ بنا رہی تھی۔ کانگریس نے بی جے پی کو یاد دہانی کی کہ کالادھن واپس لانے کے انتخابی وعدہ کا کیا ہوا۔ برسراقتدار پارٹی پر لوک سبھا انتخابات کے دوران کالے دھن کے بارے میں ’’بلند بانگ‘‘ دعوے کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کانگریس کے ترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے کہا کہ عہد کیا گیا تھا کہ 55 ہزار کھاتوں کی تفصیلات کا انکشاف کیا جائے گا لیکن حکومت پانچ ماہ میں 55 روپئے تک بھی وطن واپس لانے سے قاصر رہی۔ حالانکہ بی جے پی کو برسراقتدار آئے پانچ ماہ ہوچکے ہیں۔ تاحال بی جے پی نے پرزور انداز میں کہا کہ مرکزی حکومت بیرون ملک جمع کالے دھن کو وطن واپس لانے کا پختہ ارادہ رکھتی ہے اور اس سمت موثر کارروائی جاری ہے۔ کانگریس نے کالا دھن مسئلہ پر اس وقت تنقید کی ہے جبکہ مرکز نے ایچ ایس بی سی بینک جنیوا میں 627 ہندوستانی کھاتہ داروں کی فہرست سپریم کورٹ کو اس کی ہدایت کی تعمیل کرتے ہوئے پیش کردی ہے۔ سنگھوی نے کہا کہ کسی بھی سیاسی پارٹی کے لئے عوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش کرنا فضول ہے۔ بی جے پی نے وعدہ کیا تھا کہ برسراقتدار آنے پر 55 ہزار کھاتوں کی تفصیلات کا انکشاف کیا جائے گا، لیکن پانچ ماہ گذرنے پر بھی 55 روپئے تک واپس لانے سے قاصر رہی۔ آج آپ نے جو کچھ کیا ہے، کل کے عدالتی حکم کی تعمیل میں کیا ہے۔ ان کے ساتھی کانگریس قائد منیش تیواری نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال کے دوران بی جے پی چلّا رہی تھی کہ اگر اس کے پاس نام ہوتے تو انہیں برسرعام ظاہر کیا جاتا اور اندرون 100 دن کالادھن واپس لاکر عوام میں تقسیم کیا جاتا۔ اس لئے انہیں فوری تمام نام برسرعام بتانا چاہئے۔ سپریم کورٹ میں نام پیش کرنے کی کارروائی کا دفاع کرتے ہوئے نائب صدر بی جے پی مختار عباس نقوی نے کہا کہ حکومت اس مسئلہ پر حساس ہے، مخلص ہے اور اس سمت میں موثر کارروائی کررہی ہے۔ ناموں کے انکشاف کے عدالتی حکم کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ قانونی طریقہ کار ہے اور حکومت اس سمت میں سختی سے عمل پیرا ہے۔

TOPPOPULARRECENT