Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / حیات نگر میں کتے کی ہڈیوں سے چربی تیار کرنے کا کارخانہ

حیات نگر میں کتے کی ہڈیوں سے چربی تیار کرنے کا کارخانہ

دودھ ، چائے پاؤڈر ، ٹوتھ پیسٹ ،تیل میں ملاوٹ، انسانی صحت سے کھلواڑ ، حکومت کی توجہ ضروری
حیدرآباد۔26 اکتوبر (سیاست نیوز) شہر و نواحی علاقوں میں ملاوٹی اشیاء کی فروخت کے کئی واقعات منظر عام پر آئے ہیں لیکن چند ایسے حقائق کا پتہ چلا جس کے بعد بازار میں فروخت ہونے والی غذائی اشیاء کے استعمال کے معاملے میں ہر شخص کو کئی بار سوچنا پڑے گا۔ بازاروں میں استعمال ہونے والے تیل میں جانور کی ہڈی سے نکالی گئی چربی ملائی جاتی ہے اور یہ صحت کیلئے انتہائی مضرت رساں ہیں۔ نواحی علاقہ میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ کُتّوں کی ہڈی، چربی اور جلد کو تجارتی اغراض کیلئے استعمال کیا جارہا ہے۔ ایک مقامی ٹی وی چیانل پر بھی اس بارے میں رپورٹ پیش کی گئی تھی۔ معلوم ہوا ہے کہ حیات نگر کے صنعتی علاقوں میں کتوں کی ہڈی سے پاؤڈر تیار کیا جارہا ہے اور اسے چائے کے پاؤڈر کے علاوہ ٹوتھ پیسٹ میں استعمال کیا جاتا ہے۔ کتے کی چربی اور جلد سے نکالا جانے والا تیل مقامی ہوٹلوں میں سپلائی کیا جارہا ہے۔ یہ ایک انتہائی خطرناک رجحان ہے اور تاجرین محض اپنے حقیر فائدے کیلئے عوام کی زندگیوں سے کھلواڑ کررہے ہیں۔

ٹی وی پر بھی جب اس حقیقت کو پیش کیا گیا تو حکومت نے کوئی کارروائی نہیں کی، حالانکہ عوامی صحت کے معاملے میں یہ انتہائی تشویشناک پہلو ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ حیات نگر علاقہ میں بلدیہ کے ایسٹ زون دفتر کے قریب آبادی سے دور ایک کارخانہ چلایا جارہا ہے، یہاں کتے لائے جاتے ہیں اور انہیں مار کر جلا دیا جاتا ہے، اس کے بعد ان کی ہڈیوں سے پاؤڈر تیار کیا جاتا ہے۔ کئی ہوٹلوں میں سربراہ کئے جانے والے دودھ میں بھی یہ پاؤڈر ملایا جارہا ہے۔ حیرت انگیز پہلو یہ ہے کہ کتوں کی اس تجارت میں اپنے کاروبار کو محفوظ رکھنے کیلئے کتوں کا ہی استعمال ہورہا ہے۔ اس کارخانے میں ایسے خونخوار کتے موجود ہیں جن کی وجہ سے کسی اجنبی شخص کا داخلہ ناممکن ہے۔ حکومت اگر فوری متحرک ہوتے ہوئے اس معاملے میں کارروائی نہ کرے تو اندیشہ ہے کہ اس طرح کے مزید کارخانے قائم ہوجائیں گے اور انسانی صحت خطرے سے دوچار ہوجائے گی۔

TOPPOPULARRECENT