Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآبادی فلموں میں اصلاح معاشرہ کے ساتھ تفریح

حیدرآبادی فلموں میں اصلاح معاشرہ کے ساتھ تفریح

عزیز ناصر اور عدنان ساجد گلو دادا کی نئی پیشکش ’ انسپکٹر گلو ‘ صاف ستھری حیدرآبادی فلم
حیدرآباد۔13فروری (سیاست نیوز) حیدرآبادی فلموں کی دنیا میں تیزی سے آنے والی تبدیلی سے ایسا محسوس ہورہاہے کہ فلمی دنیا معاشرتی تبدیلی میں اہم کردار ادا کرنے لگی ہے اور حیدرآبادی فلموں کے ذریعہ مثبت فکر کے فروغ میں بھی اہم کردار ادا کیا جا رہا ہے ۔ ’دی انگریز‘ سے شروع ہونے والی حیدرآبادی فلموں کے مزاحیہ دور کی شروعات کے بعد سے اب تک کئی فلمیں منظر عام پر آچکی ہیں لیکن جناب عدنان ساجد (گلودادا) اور عزیز ناصر نے مزاحیہ فلموں کی اس دنیا کو تجارتی مقاصد کے ساتھ اصلاح معاشرہ کا بھی ذریعہ بنایا اور اس کا سلسلہ اب بھی جاری ہے۔ 16فروری کو ریلیز ہونے والی ’انسپکٹر گلو‘ پہلی ایسی فلم ہے جو حیدرآبادی ’دکنی‘ زبان میں دہشت گردی کے خلاف بنائی گئی ہے۔ عزیز ناصر کی کہانی اور ان کے ڈائریکشن میں تیار کی گئی اس فلم میں تلنگانہ پولیس کی کارکردگی کو غیر جانبدارانہ طرز پر پیش کرنے کے علاوہ دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے کئے جانے والے اقدامات کے ساتھ دہشت گردی کو فروغ دینے والوں کے حقائق کو پیش کیا کیا گیا ہے۔ دہشت گردی جیسے سنجیدہ موضوع کو مزاحیہ فلم کے ذریعہ پیش کرنے کی کوشش کے متعلق پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے جنا ب عزیز ناصر نے کہا کہ حیدرآبادی فلمیں جو کہ اب ’ڈالی ووڈ‘ کہلانے لگی ہیں اور اس کے فنکاروں کو نہ صرف حیدرآباد بلکہ دنیا کے کئی ممالک میں ان کی پذیرائی کی جارہی ہے اوردنیا میں فی الحال دہشت گردی کے نام پر مخصوص طبقہ کو بدنام کرنے کی کوششیں بھی عروج پر ہیں اسی لئے مزاحیہ انداز میں اس انتہائی حساس موضوع کو پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ انہوںنے بتایا کہ ’انسپکٹر گلو ‘ ایک ایسی صاف و شفاف حیدرآبادی فلم ہے جس میں کوئی ذومعنی مکالمہ بھی نہیں ہیں بلکہ اس فلم کے ذریعہ کامیڈی اور حساس نوعیت کے حالات کویکساں پیش کیا جا رہاہے ۔ جناب عزیز ناصر نے بتایا کہ حیدرآبادی فلمو ںمیں اب تک ناظرین نے مختلف سماجی مسائل کا مشاہدہ کیا ہے اور ان مسائل کو مذاق کے ساتھ ان کے سبب پیدا ہونے والے حالات کو پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے لیکن اب جو موضوع کا انتخاب کیا گیا ہے اس موضوع کی حساسیت اور اس میں مذاق کا پہلو برقرار رکھتے ہوئے اسے پیش کیا جانا کمال ثابت ہوگا۔ جناب عدنان ساجد جو کہ اس فلم میںکلیدی کردار ادا کرر ہے ہیں وہ انسپکٹر کے رول میں نظر آئیں گے اور عزیز ناصر جو کہ فلم کی کہانی اور ڈائریکشن کر رہے ہیں وہ بھی اس فلم کے ذریعہ حقائق کو اجاگر کرنے کی کوشش کریں گے۔ اس فلم کے فنکاروں اور ٹیم کے ذمہ داروں کا کہنا ہے کہ یہ فلم جو 16فروری کو ریلیزہونے جا رہی ہے حیدرآبادی مزاحیہ فلموں کی تاریخ میں ایک منفرد فلم ثابت ہوگی کیونکہ اس فلم کے ذریعہ نوجوانوں کو پیغام دینے کی کوشش کی گئی ہے۔ حیدرآبادی فلموں میں سماجی مسائل کو پیش کرتے ہوئے ان کے حل کی راہیں بھی بتائی جاتی ہیں اور اس فلم میں بھی ان تمام نکات کا جائزہ لیا گیا ہے جس کے سبب دہشت گردی جنم لیتی ہے اور اس کے خاتمہ کو کیسے یقینی بنایا جاسکتا ہے لیکن مزاحیہ انداز میں اس سنجیدہ موضوع کو پیش کرنے کی کوشش سے یہ بات عام ذہنوں تک پہنچائی جا سکتی ہے۔ جناب عزیز ناصر نے بتایا کہ ’انسپکٹر گلو‘ انتہائی صاف ستھری فلم بنائی گئی ہے جو کہ تمام اہل خانہ کے ساتھ دیکھی جا سکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT