Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآبادی نوجوان سید کرمانی کو 14 دن کی عدالتی تحویل

حیدرآبادی نوجوان سید کرمانی کو 14 دن کی عدالتی تحویل

دہشت گردانہ کارروائیوں کے الزام میں گجرات پولیس کی خفیہ کارروائی (ایس ایم بلال )

دہشت گردانہ کارروائیوں کے الزام میں گجرات پولیس کی خفیہ کارروائی

(ایس ایم بلال )
حیدرآباد 9 مئی ۔ گجرات احمد آباد کی ڈیٹکشن کرائم برانچ ( ڈی سی بی) پولیس نے ایک خفیہ آپریشن میں شمس آباد راجیو گاندھی ایر پورٹ سے حیدرآبادی نوجوان سید کرمانی کو پوٹا کیس میں گرفتار کر کے گجرات منتقل کرتے ہوئے خصوصی پوٹا عدالت میں پیش کرنے کے بعد 14 دن کیلئے عدالتی تحویل میں دیدیا ۔ باوثوق ذرائع نے بتایاکہ سید کرمانی جس کا تعلق پرانا شہر کے علاقہ بھوانی نگر تالاب کٹہ سے ہے کہ خلاف سال 2003 سے DCB-6 پوٹا مقدمہ میں غیر ضمانتی وارنٹ زیر التواء تھا ۔ کرمانی کو گجرات پولیس کی ایک ٹیم نے گرفتار کرلیا اور اسے فوری ٹرانزٹ وارنٹ پر احمد آباد منتقل کردیا ۔ یہ گرفتاری دو دن قبل پیش آئی لیکن یہاں کی پولیس نے اسے انتہائی راز میں رکھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ DCB-6 مقدمہ ملک کے خلاف جنگ چھیڑنے ،مجرمانہ سازش کے علاوہ کئی بی جے پی قائدین کو ہلاک کرنے کے منصوبہ کے تحت درج کیا گیا تھا ۔ واضح رہے کہ جاریہ سال 23 مارچ کو احمد آباد کرائم برانچ نے مولانا محمد عبدالقوی ناظم اشراف العلوم خواجہ باغ سعید آباد کو دہلی کے اندرا گاندھی انٹر نیشنل ایر پورٹ پر گرفتار کرتے ہوئے انہیں بھی احمد آباد منتقل کرتے ہوئے سابرمتی جیل بھیج دیا تھا ۔ باوثوق ذرائع نے مزید بتایا کہ سید کرمانی اسی کیس کے ایک اور اہم ملزم محمد افروز ساکن چنچل گوڑہ محبوبیہ مسجد کا ساتھی ہے ۔ احمد آباد کرائم برانچ نے کرمانی پر یہ الزام عائد کیا کہ اس نے دیگر ملزمین کے ہمراہ ہندوستان میں دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث ہوتے ہوئے پاکستان کی دہشت گرد تنظیم جیش محمد سے تعلقات بھی قائم کئے تھے اور کئی مسلم نوجوانوں کو پاکستان و بنگلہ دیش بھیجنے میں اہم رول ادا کیا تھا۔بتایا جاتا ہے کہ گودھرا 2002 فسادات کا انتقام لینے کی غرض سے کرمانی اور دیگر ملزمین نے ایک سازش رچی تھی جس کے تحت کئی اہم شخصیتوں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی اور گجرات کے مافیہ ڈان رسول خاں پارٹی اور مفتی صوفیان کو حیدرآباد میں قیام کے دوران سازش میں حصہ لیا تھا ۔ سال 2003 میں گجرات پولیس کی جانب سے شہر کے کئی مسلم نوجوانوں کو سلسلہ واری گرفتاری کے پیش نظر کرمانی نے ملک چھوڑدیا تھا اور خلیج ملک میں پناہ لے لی تھی۔ گجرات پولیس کے ریکارڈس کے بموجب حیدرآباد کے مزید 7 نوجوان جعفر بھائی ،شکیل ،سلیم ، اسلم خان ، نعیم افروز محمد اقبال سمیع اور خواجہ معین الدین ہنوز مفرور بتائے گئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ کرمانی کو 21 دن کی پولیس تحویل میںلینے کیلئے ڈی سی بی نے خصوصی پوٹا جج شریمتی گیتا گوپی کے اجلاس پر درخواست داخل کی ہے۔ سید کرمانی کی گجرات پولیس کی جانب سے گرفتاری کی اطلاع پر مقامی نوجوانوں میں بے چینی پائی جاتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT