Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد ، دوبئی اور سنگاپور سے کہیں زیادہ سستا شہر

حیدرآباد ، دوبئی اور سنگاپور سے کہیں زیادہ سستا شہر

کرایوں سے لے کر کھانے پینے کی اشیاء تک سستی کاش بیرون ملک جانے کے خواہاں نوجوان اپنے شہر میں قسمت آزماتے

کرایوں سے لے کر کھانے پینے کی اشیاء تک سستی
کاش بیرون ملک جانے کے خواہاں نوجوان اپنے شہر میں قسمت آزماتے
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اگست : ( سیاست ڈاٹ کام ) : ریاستی حکومت نے حیدرآباد کو دوبئی اور سنگاپور کی طرز پر ترقی دینے کا منصوبہ بنایا ہے اور بہت جلد یہاں بیرونی سرمایہ کاروں اور صنعت کاروں کو سرمایہ کاری کے لیے راغب کرنے کے ایک خصوصی منصوبہ کا اعلان کرنے والی ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت دنیا کے سرمایہ کاروں اور صنعت کاروں کو یہ بتانا چاہتی ہے کہ شہر حیدرآباد معیار زندگی کے لحاظ سے دنیا کے موزوں ترین شہروں میں سرفہرست ہے اس وجہ سے سرمایہ کار یہاں اپنا سرمایہ مشغول کرسکتے ہیں اور اختراعات کے اس مرکز میں جو عنقریب عالمی سطح پر پرکشش مقام بن جائے گا اپنی سرمایہ کاری کے ثمرات بھی حاصل کرسکتے ہیں ۔ اگرچہ شہری ہوا بازی کے رابطوں ، سڑکوں کے جال اور رابطوں کے علاوہ دیگر سہولتوں کے معاملہ میں حیدرآباد دوبئی اور سنگاپور سے کافی پیچھے ہے ۔ لیکن یہاں معیار زندگی بہت سستی ہے جب کہ دوبئی اور سنگاپور میں غریب اور متوسط آدمی زندگی گذارنے کا تصور بھی نہیں کرسکتا ۔ حیدرآباد میں قیام و طعام کے اخراجات اور کرائے بہت کم ہیں ۔ حال ہی میں ایک رپورٹ منظر عام پر آئی جس میں بتایا گیا کہ دوبئی میں معیار زندگی بہت بلند ہے اور وہاں دولت مند ہی زندگی کے مزے لوٹ سکتے ہیں ۔ وہاں اشیاء کی قیمتیں حیدرآباد سے 162.34 فیصد زیادہ ہیں ۔ دوبئی میں روزمرہ استعمال ہونے والی اشیاء جیسے دودھ ، انڈے ، چاول اور سبزیاں حیدرآباد سے کم از کم دوگنی قیمتوں میں فروخت کی جاتی ہیں ۔ مثال کے طور پر دودھ کی قیمت جو ہمارے شہر میں تقریبا 40 روپئے فی لیٹر ہے ۔ دوبئی میں اس کی قیمت 90 روپئے ہے اور بیشتر اشیاء کی قیمتوں کا یہی حال ہے ۔ ہمارے شہر میں ٹرانسپورٹیشن ، برقی ، پانی ، انٹرنیٹ کی سہولتیں بھی سستی ہیں ۔ جب کہ دوبئی اور سنگاپور میں یہ بہت زیادہ ہیں ۔ اس بات کا بھی پتہ چلتا ہے کہ دوبئی اور حیدرآباد میں عمارتوں اور دکانات شاپس (آوٹ لیٹس ) وغیرہ کے کرایوں میں بھی زمین آسمان کا فرق پایا جاتا ہے ۔ ہوٹلوں ریسٹورنٹس اور تفریحی مقامات کے کرایوں اور اخراجات کے معاملہ میں حیدرآباد بہت سستا مقام ہے صرف ایک چیز ہے جو حیدرآباد کی بہ نسبت دوبئی میں سستی ہے اور وہ ہے پٹرول و دیگر فیولس ، شہر میں 78 روپئے فی لیٹر پٹرول فروخت کیا جارہا ہے جب کہ دوبئی میں ایک لیٹر پٹرول کی قیمت 29 روپئے ہے اس کے باوجود ٹرانسپورٹیشن ( حمل و نقل ) دوبئی میں حیدرآباد سے کہیں زیادہ مہنگا ہے ۔ حیدرآباد میں ٹیکسی کا اعظم ترین کرایہ 50 روپئے ہے دوبئی میں 58 روپئے رکھا گیا ہے ۔ شہر میں ایک کیلو میٹر فاصلہ کا کرایہ 15 روپئے مقرر کیا گیا ہے ۔ دوبئی میں ایک کیلو میٹر فاصلہ طئے کرنے پر 30 روپئے کرایہ ادا کرنا پڑتا ہے ۔ یہ اعداد و شمار سنگاپور میں تو بہت زیادہ ہیں ۔ سنگاپور میں مہنگائی حیدرآباد سے 287.87 فیصد زیادہ ہے ۔ وہاں ایک لیٹر دودھ کی قیمت 140 روپئے ہے جب کہ چاول انڈے اور آلو بالترتیب 179 روپئے کیلو ، 130 روپئے درجن اور 130 روپئے کیلو دستیاب ہیں ۔ سنگاپور میں کرائے حیدرآباد سے 1500 فیصد زیادہ ہیں ۔ ایسے میں حیدرآباد ، دوبئی اور سنگاپور کی بہ نسبت سرمایہ کاروں کے لیے بہت ہی زیادہ پرکشش مقام ہے ، یہ ایسا شہر ہے جہاں کچھ رقم کی سرمایہ کاری کرتے ہوئے محنت کی جائے تو ہمارے نوجوان اسی شہر میں اتنا ہی کما سکتے ہیں جتنا انہیں دوبئی اور سنگاپور میں کمانے کی امید ہے وہ انفرادی طور پر بھی کاروبار شروع کرسکتے ہیں ۔ یا پھر گروپس کی شکل میں بھی شہر اور اس کے اطراف و اکناف مختلف اشیاء کی تیاری کے یونٹس قائم کرسکتے ہیں ۔ اس کے علاوہ آج کل کھانے پینے کی اشیاء کی بہت مانگ ہے لوگ کھانوں کے شوقین ہوگئے ہیں وہ شہر کے مختلف مقامات پر ذائقہ دار حیدرآبادی ڈشس فراہم کرتے ہوئے اپنی آمدنی میں اضافہ کرسکتے ہیں ۔ بہر حال ہمارے نوجوانوں کو بیرون ملک جانے سے پہلے حیدرآباد میں مہیا سنہری موقعوں سے استفادہ کرنا ہوگا تب انہیں اندازہ ہوگا کہ اپنوں کے درمیان رہ کر وہ بھی اچھا خاصا کما سکتے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT