Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد مرکز کے حجاج کرام کی واپسی کا عمل مکمل

حیدرآباد مرکز کے حجاج کرام کی واپسی کا عمل مکمل

ایرانڈیا حکام کا عدم تعاون اور لاپراوہی، آئندہ سال سعودی ایرلائنس کی خدمات حاصل کی جائیں گی

حیدرآباد۔/11اکٹوبر، ( سیاست نیوز) حج 2016کی سعادت حاصل کرنے کے بعد حیدرآباد امبارگیشن پوائنٹ سے روانہ تلنگانہ، آندھرا پردیش اور کرناٹک کے تمام حجاج کرام کی واپسی کا عمل آج رات مکمل ہوگیا۔ ایر انڈیا کی 15 خصوصی پروازوں سے جملہ 4878 حجاج کرام وطن واپس ہوچکے ہیں اور آخری قافلہ رات 10 بجے شمس آباد انٹرنیشنل ایرپورٹ پہنچا۔ تمام حجاج کرام مدینہ منورہ سے وطن واپس ہوئے ہیں۔ تلنگانہ، آندھرا پردیش اور کرناٹک کے حجاج کرام کی واپسی کا عمل مکمل ہونے پر تلنگانہ حج کمیٹی نے اطمینان کی سانس لی ہے۔ اس طرح حج 2016 کیمپ کی سرگرمیاں اختتام کو پہنچیں۔آج 3 قافلوں کی واپسی سے حجاج کرام کی واپسی کا عمل مکمل ہوگیا۔ پہلی فلائیٹ رات دیر گئے 3بجکر 20منٹ پر شمس آباد انٹرنیشنل ایرپورٹ پہنچی جس میں 339 حجاج کرام تھے۔ اسپیشل آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور، صدرنشین حج کمیٹی آندھرا پردیش مومن حسین، رکن قانون ساز کونسل آندھرا پردیش احمد شریف اور دوسروں نے حجاج کا استقبال کیا۔ اس قافلہ میں آندھرا پردیش کے حجاج کرام کی اکثریت تھی۔ دوسری فلائیٹ شام  7 بجکر 40 منٹ پر حیدرآباد واپس ہوئی جس میں 142 حجاج کرام تھے۔ یہ قافلہ روانگی کے وقت آخر میں روانہ ہوا تھا اور کم تعداد کے باعث ایر انڈیا نے حیدرآباد اور ممبئی کے قافلوں کو ایک ساتھ منتقل کیا تھا لیکن واپسی میں ایک دن قبل ہی یہ قافلہ واپس ہوا۔ تیسرا اور حج سیزن کا آخری قافلہ رات 10بجے حیدرآباد واپس ہوا جس میں 340 حجاج کرام موجود تھے۔ اسپیشل آفیسر تلنگانہ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور کے مطابق 4 حجاج کرام مختلف وجوہات کے سبب سعودی عرب میں رُکے ہوئے ہیں جبکہ ایک خاتون حاجی علالت کے باعث کنگ عبدالعزیز ہاسپٹل مکہ مکرمہ میں زیر علاج ہیں۔ ضمیر النساء نامی خاتون حاجی کے ساتھ ان کے شوہر محمد غوث بھی مکہ مکرمہ میں ہیں اور صحتیابی کے بعد حیدرآباد واپسی کا انتظام کیا جائے گا۔ پروفیسر ایس اے شکور کے مطابق 20 حجاج کرام مقررہ وقت سے قبل ہی وطن واپس ہوچکے ہیں۔ اب تک آنے والے 15 قافلوں میں 5 شیر خوار بھی واپس ہوئے۔ حجاج کرام نے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں کئے گئے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا۔ حکومت سعودی عرب، حج مشن اور حج کمیٹی کی جانب سے موثر انتظامات کئے گئے تھے۔ حجاج کو حج ٹرمنل میں فی کس 5 لیٹر زم زم کا کیان حوالے کیا گیا۔ جاریہ حج سیزن میں ایر انڈیا حکام کے عدم تعاون کے سبب نہ صرف حج کمیٹی بلکہ حجاج کرام کو کئی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ حج ٹرمنل میں دیگر تمام محکمہ جات کے عہدیدار ہر فلائیٹ کی آمد کے موقع پر موجود تھے لیکن ایر انڈیا کے عہدیداروں اور ملازمین نے انتہائی لاپرواہی کا مظاہرہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں سنٹرل حج کمیٹی اور ایر انڈیا کے نئی دہلی میں ذمہ داروں کو اطلاع دے دی گئی ہے۔ حجاج کرام نے حج کمیٹی سے مطالبہ کیا کہ ایر انڈیا کے رویہ کے خلاف بطور احتجاج آئندہ سال سے دوبارہ سعودی ایر لائنس کی خدمات حاصل کی جائیں۔ حج ٹرمنل کے باہر حجاج کرام کے رشتہ داروں اور دوست احباب کی کثیر تعداد استقبال کیلئے موجود تھی۔ واضح رہے کہ حجاج کرام کے قافلوں کی واپسی کا 5 اکٹوبر سے آغاز ہوا تھا۔ گزشتہ سال ایر انڈیا نے حجاج کرام کیلئے بہترین خدمات فراہم کی تھی تاہم جاریہ سال ان کی خدمات غیر اطمینان بخش رہیں۔

TOPPOPULARRECENT