Monday , February 19 2018
Home / Top Stories / حیدرآباد میٹرو ریل کانگریس پارٹی کا کارنامہ ‘ اتم کمار

حیدرآباد میٹرو ریل کانگریس پارٹی کا کارنامہ ‘ اتم کمار

چندر شیکھر راؤ سہرا اپنے سر باندھنے کیلئے کوشاں۔ پردیش کانگریس کا پاور پوائنٹ پریزینٹیشن

حیدرآباد 26 نومبر ( این ایس ایس ) حیدرآباد میٹرو ریل کو کانگریس پارٹی کا کارنامہ قرار دیتے ہوئے صدر پردیش کانگریس این اتم کمار ریڈی نے آج کہا کہ ٹی آر ایس حکومت غلط طور پر اس کا سہرا اپنے سر باندھنے کی کوشش کر رہی ہے ۔ حیدرآباد میٹرو ریل پر کانگریس پارٹی کی جانب سے منعقدہ پاور پوائنٹ پریزینٹیشن میں خطاب کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے کہا کہ اس پراجیکٹ کیلئے نہ تلنگانہ کی ٹی آر ایس حکومت نے اور نہ مرکز کی بی جے پی حکومت نے کوئی رول نبھایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ در اصل کے سی آر نے اس پراجیکٹ پر عمل آوری میں مسائل پیدا کرنے والا کا رول نبھایا تھا ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ حیدرآباد میٹرو ریل کاگنریس حکومت کا پراجیکٹ تھا انہوں نے موجودہ حکومت کی جانب سے اس کا سہرا اپنے سر باندھنے کی کوششوں کو ’’ کام ہمارا ۔ نام تمہارا ‘‘ قرار دیا ۔ اتم کمار ریڈی نے کہا کہ سابقہ چیف منسٹر ڈاکٹر راج شیکھر ریڈی نے 2007 میں حکومت ہند سے میٹرو ریل کی منظوری حاصل کی تھی ۔ انہوں نے میٹرو ریل بھون کا افتتاح بھی کیا تھا ۔ رعایتی معاہدہ پر 4 ستمبر 2010 میں دستخط کئے گئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ میٹرو ریل کے کاموں کا اس وقت کے چیف منسٹر کرن کمار ریڈی نے 25 ڈسمبر 2012 کو افتتاح انجام دیا تھا ۔ میٹرو ریل کی ٹرائیل رن در اصل 2014 کے اواخر میں منعقد ہونے والی تھی تاہم ٹی آر ایس حکومت نے عمدا اس پراجیکٹ میں تاخیر کی تاکہ اس کارنامہ کا سہرا کانگریس کے سر نہ جانے پائے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس نے کہا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ سیاسی حرص کا شکار ہیں اور یہی وجہ ہے کہ انہوں نے اس پراجیکٹ میں تاخیر کی جس کی وجہ سے اس کے اخراجات بھی بڑھ گئے ۔ انہوں نے کہا کہ اس تاخیر کی وجہ سے پراجیکٹ کی قیمت میں 4,000 کروڑ کا اضافہ ہوگیا اور ڈھائی سال کا وقت ضائع ہوگیا ۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا یہ عوامی رقومات کا مجرمانہ زیاں نہیںہے ؟ ۔ کیا اس کیلئے کے سی آر ذمہ دار نہیں ہیں ؟ ۔ انہوں نے چیف منسٹر پر پراجیکٹ کی تاخیر کے ذریعہ سماجی گناہ کا الزام عائد کیا ۔ کرن کمار ریڈی نے الزام عائد کیا کہ چندر شیکھر راؤ کو دوسروں کے کاموں کا سہرا اپنے سر باندھنے کی عادت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر تہذیب و اخلاق سے عاری ہیں اور انہوں نے اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کو حیدرآباد میٹرو ریل کے افتتاح کے موقع پر مدعو تک نہیں کیا ہے ۔ انہوں نے دعوی کیا کہ حیدرآباد میٹرو ریل سابقہ کانگریس حکومت کے حیدرآباد کو ایک عالمی معیار کے شہر میں تبدیل کرنے کے ویژن کا حصہ تھا ۔ انہوں نے 2004 – 2014 کے دہے کو حیدرآباد کیلئے سنہرا دہا قرار دیا ۔

TOPPOPULARRECENT