Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میڈیکل ہب میں تبدیل ، غیر ملکیوں کے استفادہ میں اضافہ

حیدرآباد میڈیکل ہب میں تبدیل ، غیر ملکیوں کے استفادہ میں اضافہ

بیرونی مریضوں کے لیے خصوصی بلاک ، کم خرچ پر معیاری علاج کے لیے عوام کا بھروسہ
حیدرآباد ۔ 9 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : شہر ہیلت سٹی میں تبدیل ہورہا ہے ۔ ہمارا طریقہ علاج غیر ملکیوں کو کھینچ لا رہا ہے اور یہاں کی میڈیکل سہولیات بین الاقوامی سطح پر متعارف ہونے کی وجہ سے غیر ملکی مریضوں کی تعداد میں زبردست اضافہ ہورہا ہے ۔ امریکہ ، انگلینڈ اور دیگر ملکوں کے مقابلہ یہاں علاج بآسانی دستیاب ہے ۔ جس کی وجہ سے سالانہ 15 ہزار غیر ملکی مریض شہر حیدرآباد آکر اپنا علاج کروا رہے ہیں ۔ مقامی ڈاکٹرس کے مطابق ماہر ڈاکٹرس ، کم خرچ اور کامیاب علاج کی وجہ سے غیر ملکی مریضوں کی تعداد میں کافی اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ امریکہ ، یورپی ممالک ، افریقی ممالک اور عرب ممالک سے ہارٹ ، کڈنی ، لنگس ، کینسر ، برین ، آنکھ ، کان ، ناک ، منہ کے علاج اور گھٹنوں کی تبدیلی کے لیے مریض آرہے ہیں ۔ جس کی وجہ سے نوابوں کا شہر حیدرآباد ہیلت گیاریج میں تبدیل ہورہا ہے ۔۔
صومالیائی باشندہ محمد نے کہا کہ سعودی عرب میں دہشت گردانہ حملے میں مجھے گولی لگی اور وہاں سرجری کی گئی مگر بدن میں پیوست گولی کو وہاں کے ڈاکٹرس نکال نہیں پائے اس لیے میں نے حیدرآباد کا رخ کیا اور یہاں کے ڈاکٹرس نے آپریشن کے ذریعہ جسم میں پیوست گولی کو نکال دیا ۔ فی الحال صحت مند ہوں اور یہاں علاج کے لیے بہت کم خرچ آیا ہے ۔ علاوہ ازیں ڈاکٹرس کی خدمات بھی لائق ستائش ہیں ۔
زمانہ ماضی میں قلب کے آپریشن کے لیے یہاں سہولیات نہیں تھے امریکہ اور انگلینڈ جانا پڑتا تھا اور کسی بھی بڑے آپریشن کے لیے ان ملکوں کا سفر کرنا پڑتا تھا وہاں علاج کافی مہنگا مگر زندگی کی امید وہاں کھینچ لے جاتی تھی ۔ اب حالات میں تبدیلی آئی ہے ۔ بے حد اہم علاج بہت کم خرچ پر بھارت میں اور وہ بھی شہر حیدرآباد میں دستیاب ہورہا ہے ۔ جس کی وجہ سے ایشیائی ممالک ، افریقی ممالک ، یورپی ممالک اور عرب ممالک کے مریض حیدرآباد کا رخ کررہے ہیں ۔ اعلیٰ تعلیم اور روزگار کی تلاش میں روزانہ سینکڑوں حیدرآبادی غیر ممالک کا سفر کررہے ہیں تو اتنی ہی تعداد میں غیر ملکی بھی کامیاب علاج کی تلاش میں شہر حیدرآباد کا سفر کررہے ہیں ۔ امریکہ کے علاوہ ایتھوپیا ، نائیجریا ، عمان ، قطر ، بہماس ، کمبوڈیا ، پاکستان ، بنگلہ دیش ، افغانستان ، ایران ، عراق ، مسقط ، دوحہ ، سعودی عرب ، سوڈان ، سنگاپور ، انڈونیشیا ، تھائی لینڈ ، مالدیپ جیسے ملکوں سے مریض کثیر تعداد میں شہر آرہے ہیں جس کی وجہ سے یہاں کے دواخانوں کو 100 کروڑ سے زائد آمدنی ہونے کا اندازہ ہے ۔۔
یہاں پر علاج بہت آسان ہے
غیر ممالک میں ڈاکٹر اپائنمنٹ کیلئے سات آٹھ ماہ انتظار کرنا پڑتا ہے ۔ مگر یہاں کے حالات بالکل ایسے نہیں ہیں علاج کرنے بعد ہفتہ دس دن میں اپنے ملک کو واپس جاسکتے ہیں اور مریض کی دیکھ بھال کے لیے بہت کم خرچ نرسس کی خدمات حاصل ہیں ۔ بڑی بات یہ ہے کہ مریض کے افراد خاندان ساتھ نہ ہونے کے باوجود مریض خود اکیلا آکر ہی علاج کراسکتا ہے جب کہ غیر ممالک میں یہ سہولت دستیاب نہیں ہے ۔ علاوہ ازیں یہاں بہت کم خرچ بڑے بڑے علاج کامیاب طریقہ سے کیے جاتے ہیں ۔۔
ویٹ لاس سرجریوں کا مرکز
شہر ویٹ لاس سرجریوں کے لیے مرکزی حیثیت میں تبدیل ہورہا ہے ۔ تنزانیہ ، ایتھوپیا اور کینیا جیسے ممالک کے باشندے بھی گریٹر حیدرآباد کے ڈاکٹرس سے ہی رجوع ہورہے ہیں ۔ امریکی میڈیکل اسوسی ایشن کے تازہ سروے کے مطابق 2012 میں ملکی سطح پر 6000 آپریشنس کیے گئے تو ان میں سے 800 آپریشنس حیدرآباد میں کئے گئے ہیں جب کہ بھارت کو 75 ہزار ہر قسم کی بیماری میں مبتلا مریض 2014 میں غیر ممالک سے آئے ہیں تو 2016 میں یہ تعداد 2 لاکھ تک پہونچ گئی ہے اور اس میں سے 15 ہزار مریض حیدرآباد میں علاج کے لیے رجوع ہوتے ہیں ۔۔
غیر ملکی مریضوں کے لیے خصوصی بلاگس
ماہر ڈاکٹرس کے مطابق عالمی سطح سوپر اسپیشالیٹی ہاسپٹلس ، نرسنگ ہومس ، اور کلینکس حیدرآباد میں اعلیٰ پیمانہ پر موجود ہیں ۔ 18 سرکاری سوپر اسپیشالیٹی ، 85 شہری صحت عامہ دواخانوں اور 7 ایریا دواخانوں کے علاوہ 2500 سے زائد خانگی ہاسپٹلس ہیں 50-55 کیاتھ لیابس ، 80 ایم آر آئی مشنس ، ، 40 کینسر ہاسپٹلس کے لیے حیدرآباد مرکزی حیثیت رکھتا ہے ۔ مختلف خانگی دواخانوں کے ذمہ داروں نے غیر ملکی مریضوں کے لیے علحدہ بلاگس اور امدادی مراکز کا قیام عمل میں لایا ہے ۔ فی الحال اپولو ، کمس ، گلوبل ، کانٹی ننٹیل ، کیر ، اسٹار ، یشودھا ، ایشین انسٹی ٹیوٹ آف گیاسٹرو انٹرالوجی ، مہاویر ، نمس ، کامنینی ، میاکس کیور ، یل وی پرساد ، رینبو ، بسواتارکم ، امریکی انکالوجی جیسے مشہور دواخانے علاج میں ایک دوسرے سے سبقت لیجانے کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں ۔۔
کم خرچ میں بہترین علاج
ماہر امراض قلب کے ڈاکٹر اے جی کے گوکھلے کے مطابق امریکہ قلب سے متعلق کسی معمولی علاج کی سرجری کے لیے 30 ہزار امریکی ڈالر ( 13.5 لاکھ روپئے ) ، بون مارو ٹرانسپلانٹیشن کے لیے 2.5 لاکھ ڈالر ( 1.12 کروڑ ) کا خرچ آتا ہے تو حیدرآباد بالترتیب علاج کے لیے 2 لاکھ ، اور 10 لاکھ خرچ آتا ہے جب کہ لنگس ٹرانسپلانٹیشن کے لیے غیر ملکوں میں 80 لاکھ سے زائد خرچ کرنا ہے تو حیدرآباد میں 20-25 لاکھ خرچ کرنا پڑتا ہے ۔ اسی لیے غیر ملکی مریض حیدرآباد کا انتخاب کرتے ہیں اتنا ہی نہیں علاج مکمل ہونے کے بعد وطن واپس ہو کر بھی ویڈیو لنکس کے ذریعہ ڈاکٹرس کے مشورے لیتے رہتے ہیں ۔۔
تمام معاملات میں حیدرآباد بہتر ہے
ڈاکٹر رویندرا ناتھ چیرمین گلوبل ہاسپٹل کے مطابق ملک کے دیگر شہروں دہلی ، چینائی ، بنگلور ، کولکاتہ ، اور ممبئی کے مقابلہ حیدرآباد میں جدید سائنسی ٹکنالوجی آلات علاج اور ماہر ڈاکٹرس زیادہ تعداد میں موجود ہیں اور یہاں مریض دواخانہ سے رجوع ہو کر علاج کے بعد واپس جانے کے بعد بھی ڈاکٹر اور مریض کا رشتہ قائم رہتا ہے اور ہر معاملہ میں احتیاط برتا جاتا ہے اور یہاں کی عوام مختلف زبانیں جیسے اردو ، تلگو ، ہندی اور انگریزی وغیرہ میں گفتگو کرتے ہیں اور یہ تہذیب ملکی و غیر ملکی مریضوں کو یہاں آنے پر مجبور کرتی ہے ۔ علاوہ ازیں قومی شناخت رکھنے والے ہاسپٹل بھی حیدرآباد میں زیادہ ہیں ۔۔
مختلف آپریشنس کے لیے غیر ممالک اور حیدرآباد میں ہونے والے اخراجات ( تقریبا )
اعضاء کی تبدیلی
غیر ممالک میں
حیدرآباد میں
کڈنی
12 لاکھ
4-6 لاکھ
لیور
1 کروڑ
20-25 لاکھ
قلب
80 لاکھ
15-20 لاکھ
لنگس
80 لاکھ
20.25 لاکھ
گھٹنوں کی تبدیلی
15 لاکھ
1.5 لاکھ
اسپین سرجری
6 لاکھ
2.5 لاکھ
بائی پاس سرجری
15-25 لاکھ
2-4 لاکھ
قلبی نالیوں کی تبدیلی
15 لاکھ
3 لاکھ
ڈینٹل سرجری
1 لاکھ
10-20 ہزار
شہر کے چند ہاسپٹلس سے رجوع ہونے والے غیر ملکی مریضوں کی تعداد ( سال گذشتہ)
اپولو ہاسپٹل 12,000
گلوبل ہاسپٹل 1,200
کیر ہاسپٹل 700
ایشین گیاسٹرو انٹرالوجی 500
یشودھا ہاسپٹل 400
سن شائن ہاسپٹل 100

TOPPOPULARRECENT