Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں ختم سال تک عالمی اُردو کانفرنس : محمود علی

حیدرآباد میں ختم سال تک عالمی اُردو کانفرنس : محمود علی

حیدرآباد۔25 مئی (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی نے ماہ نومبر یا ڈسمبر میں حیدرآباد میں عالمی اُردو کانفرنس منعقد کرنے کا اعلان کیا۔ عثمانیہ یونیورسٹی صد سالہ تقاریب کے سلسلے میں آج منعقدہ ’’شام غزل‘‘ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر نے اس تجویز کو منظوری دے دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 57 سال میں کسی زبان کے ساتھ ناانصافی ہوئی ہے تو وہ اُردو زبان ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اُردو زبان کے علاوہ مسلمانوں کی ترقی کے لئے پیش کی جانے والی کسی بھی تجویز کو قبول کرلیتے ہیں جس طرح نظام دور حکومت میں عوام خوشحال تھے، چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ ریاست میں عوام کے چہروں پر خوشحالی دیکھنا چاہتے ہیں۔ شام غزل پروگرام میں غزل گلوکار پنکج اُدھاس کے علاوہ مقامی فنکاروں کو مومنٹو پیش کئے گئے۔ اس موقع پر جناب فاروق حسین ایم ایل سی ، جناب اکبر حسین صدرنشین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن ، جناب سید عمر جلیل سیکریٹری محکمہ اقلیتی بہبود اور نواب نجف علی خاں نبیرہ آصف سابع اور دیگر موجود تھے۔ پروفیسر ایس اے شکور ڈائریکٹر ؍سیکریٹری تلنگانہ اُردو اکیڈیمی نے خیرمقدم کیا۔ بین الاقوامی شہرت یافتہ فنکار پدم شری پنکج اُدھاس نے مختلف اساتذہ کا کلام ساز پر پیش کرتے ہوئے سامعین مسحور کیا۔ جناب اسلم فرشوری نے نظامت کے فرائض انجام دیئے۔ شائقین غزل کی کثیر تعداد اس پروگرام میں شریک تھی اور باغ عامہ میں اوپن ایر آڈیٹوریم تنگ دامنی کا شکوہ کررہا تھا۔ تھیٹر کے باہر بھی وسیع اسکرین نصب کئے گئے تھے۔ محکمہ اقلیتی بہبود اور تلنگانہ اسٹیٹ اردو اکیڈیمی نے مشترکہ طور پر اس پروگرام کا اہتمام کیا تھا۔ حیدرآباد کے نامور گلوکار خان اطہر نے آصف سابع نواب میر عثمان علی خاں کا کلام پیش کرتے ہوئے پروگرام کا آغاز کیا۔ گلوکارہ صوفی معراج اور سلطان مرزا کے علاوہ رکن الدین اور دیگر نے بھی کلام سنایا۔

TOPPOPULARRECENT