Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کا قیام اور تلنگانہ حج کوٹہ میں اضافہ کا تیقن

حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کا قیام اور تلنگانہ حج کوٹہ میں اضافہ کا تیقن

نئی دہلی میں ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کی مرکزی وزیر نجمہ ہپت اللہ اور سعودی سفیر سعود السعطی سے ملاقات
حیدرآباد ۔ 2 ۔ ڈسمبر (سیاست نیوز) مرکزی وزیر اقلیتی امور نجمہ ہپت اللہ نے حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام اور حج 2016 کیلئے تلنگانہ حج کوٹہ میں اضافہ کا تیقن دیا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے آج نئی دہلی میں نجمہ ہپت اللہ سے ملاقات کی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے نئی دہلی میں سعودی عرب کے سفیر سعود السعطی سے بھی ملاقات کی اور حیدرآباد میں کونسلیٹ کے قیام کی نمائندگی کی۔ محمود علی نے حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام کیلئے مرکز کی مساعی کی خواہش کی اور کہا کہ کونسلیٹ کے قیام سے تلنگانہ کے عوام کو حج اور عمرہ کے سلسلہ میں ویزا کے حصول میں سہولت ہوگی۔ نجمہ ہپت اللہ نے اس مسئلہ کو وزارت خارجہ سے رجوع کرنے اور مثبت کارروائی کو یقینی بنانے کا تیقن دیا۔ انہوں نے حج 2016 ء کے کوٹہ الاٹمنٹ کے سلسلہ میں 2011 مردم شماری کو پیش نظر رکھنے سے بھی اتفاق کیا ہے۔ مردم شماری میں مسلم آبادی کے لحاظ سے ریاستوں کو حج کوٹہ الاٹ کیا جاتا ہے ۔ گزشتہ سال 2001 ء مردم شماری کے اعتبار سے تلنگانہ کو حج کوٹہ الاٹ کیا گیا تھا جس کے باعث ہزاروں درخواست گزاروں کو مایوسی کا سامنا کرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ میں 16,000 سے زائد افراد نے حج کیلئے درخواست فارمس داخل کیا تھا لیکن حج کوٹہ انتہائی ناکافی ثابت ہوا۔ نجمہ ہپت اللہ نے اس مسئلہ کو وزارت خارجہ اور سنٹرل حج کمیٹی سے رجوع کرنے کا تیقن دیا۔ محمود علی نے مرکزی حکومت کی پری میٹرک اسکالرشپ کے تمام درخواست گزاروں کو اسکالرشپ جاری کرنے کی اپیل کی اور کہا کہ مرکزی حکومت نے اس سلسلہ میں وعدہ کیا تھا جس پر عمل آوری کی جانی چاہئے ۔

 

دیگر ریاستوں کے مقابلہ تلنگانہ میں مرکز کی پری میٹرک اسکالرشپ کیلئے درخواست گزاروں کی تعداد مقررہ کوٹہ سے کہیں زیادہ ہے۔ ہزاروں طلبہ اسکالرشپ سے محروم ہورہے ہیں۔ لہذا مرکزی وزارت اقلیتی امور کو چاہئے کہ وہ تلنگانہ کیلئے زائد بجٹ الاٹ کرے تاکہ زیادہ سے زیادہ اقلیتی طلبہ پری میٹرک اسکالرشپ سے مستفید ہوں۔ محمود علی نے کہا کہ تلنگانہ میں مرکز کی اسکیمات پر عمل آوری کی رفتار حوصلہ افزاء ہے لہذا اقلیتوں سے متعلق مرکزی اسکیمات کیلئے تلنگانہ کو زائد بجٹ مختص کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی اسکیمات پر موثر عمل آوری کیلئے مرکزی عہدیداروں کی ٹیم حیدرآباد روانہ کی جائے۔ نجمہ ہپت اللہ نے عنقریب دورہ حیدرآباد کا تیقن دیا اور کہاکہ وہ آٹو رکشا اسکیم کے آغاز کی تقریب میں شرکت کریں گی۔ انہوں نے تلنگانہ میں اقلیتوں کی بھلائی سے متعلق شروع کی گئی اسکیمات کی ستائش کی۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی نے نئی دہلی سے سیاست کو بتایا کہ سعودی سفیر سعود السعطی نے فروری میں حیدرآباد کے دورہ سے اتفاق کرلیا ہے۔ وہ سعودی عرب کے اعلیٰ سطحی وفد کے ساتھ حیدرآباد کا دورہ کریں گے تاکہ تلنگانہ میں سرمایہ کاری کے امکانات کا جائزہ لیا جاسکے۔ سعودی سفیر نے تلنگانہ کے ساتھ مختلف شعبوں میں باہمی تعاون میں دلچسپی کا اظہار کیا اور کہا کہ کئی سعودی کمپنیاں حیدرآباد میں سرمایہ کاری کیلئے تیار ہیں ۔ انہوں نے حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام کی تجویز سے اتفاق کیا اور کہا کہ وزارت خارجہ کی منظوری ملتے ہی سعودی کونسلیٹ قائم کردیا جائے گا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے انہیں مکہ مکرمہ کی حیدرآبادی رباط کے انتظامات سے بھی واقف کرایا ۔ انہوں نے بتایا کہ حج 2015 ء میں 597 حجاج کرام کو قیام کی سہولت فراہم کی گئی تھی اور آئندہ سال ایک ہزار عازمین حج کو مفت قیام و طعام کی سہولت فراہم کرنے کی تجویز ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ آئندہ دو تین برسوں میں تلنگانہ کے تمام عازمین حج کیلئے رباط کے قیام کی سہولت فراہم کی جائے گی تاکہ عازمین حج کو رقم کی بچت ہوسکے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے سنٹرل حج کمیٹی کی جانب سے عازمین حج کو سوٹ کیس کی فراہمی کا حوالہ دیا اور کہا کہ حج 2015 ء میں پہلی مرتبہ اس اسکیم پر عمل آوری کی گئی جو ناکام ثابت ہوئی۔ کمپنی کی جانب سے فراہم کردہ سوٹ کیس ناقص تھے اور وہ لمحہ آخر میں فراہم کئے گئے جس سے عازمین کو دشواریاں پیش آئیں ۔ انہوں نے سوٹ کیس کی فراہمی کے سسٹم کو ختم کرنے کی خواہش کی۔ ڈپٹی چیف منسٹر دہلی میں اپنے قیام کے دوران وزیر خارجہ سشما سوراج اور دیگر مرکزی وزراء سے ملاقات کا منصوبہ رکھتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT