Sunday , October 21 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں قائم ایرانی طرز کی عمارت کے تحفظ کیلئے ایران سے خصوصی فنڈ اجرائی کی خواہش

حیدرآباد میں قائم ایرانی طرز کی عمارت کے تحفظ کیلئے ایران سے خصوصی فنڈ اجرائی کی خواہش

عمارات اور ایرانیوں کی خدمات پر ڈاکیومنٹری کی تجویز، ڈاکٹر حسن روحانی کیساتھ علماء کے اجلاس میں مہدی مہدوی کا خطاب
حیدرآباد۔ 16 فبروری (سیاست نیوز) ایران کے روحانی پیشوا آیت اللہ خامنہ ای کے ہندوستان میں نمائندے آقا مہدی مہدوی پور نے ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی سے درخواست کی ہے کہ حیدرآباد میں ایرانی تہذیب و تمدن کی یادگار عمارتوں کے تحفظ کے لیے خصوصی فنڈ جاری کریں۔ انہوں نے تلنگانہ میں موجود ایرانی طرز تعمیر اور ایرانیوں کی خدمات پر مبنی ڈاکیومنٹریز کی تیاری کی تجویز پیش کی۔ مہدی مہدوی پور کل ہوٹل تاج کرشنا میں علماء و مشائخین اور دانشوروں کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ ڈاکٹر حسن روحانی نے اس تقریب سے خطاب کیا۔ ابتداء میں مہدی مہدوی پور نے خیرمقدم کیا اور کہا کہ حیدرآباد مختلف اعتبار سے تاریخی نوعیت کا حامل ہے۔ شیعہ، سنی اتحاد کا مرکز یہ شہر ایرانی تہذیب اور ثقافت کا ترجمان ہے۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد باہمی اتحاد اور وحدت بین المسلمین کا درس دیتا ہے۔ مختلف مذاہب اور مسالک سے تعلق رکھنے والے افراد باہم شیر و شکر زندگی بسر کرتے ہیں۔ اہل سنت کے تمام طبقات میں محبت اہل بیت بدرجہ اتم موجود ہے اور تلنگانہ میں ہزاروں عاشور خانے موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ بلکہ ہندوستان بھر میں ہندو بھی امام حسینؓ اور اہل بیت سے محبت رکھتے ہیں۔ مہدی مہدوی پور نے کہا کہ حیدرآباد اور ایران کے تعلقات تاریخی نوعیت کے حامل ہیں اور مسلمانوں کے دلوں میں ایران سے محبت کا جذبہ موجود ہے۔ گزشتہ 800 برسوں میں ایران کے علماء اور تاجر حیدرآباد پہنچے اور انہوں نے ایرانی ثقافت کا احیا عمل میں لایا۔ قطب شاہی سلطنت قائم کی اور اسلامی انقلاب ایران کی کامیابی کے بعد امام خمینی سے عقیدت کا اظہار کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد کے عوام کی ایران سے قلبی وابستگی ہے۔ انہوں نے ڈاکٹر حسن روحانی کو مبارکباد دی کہ انہوں نے ہندوستان میں ایران کے ثقافتی مرکز سے اپنے دورے کا آغاز کیا ہے۔ مہدی مہدوی پور نے کہا کہ جنوبی ہند میں ایران کے ثقافتی آثار پر ریسرچ کیا جائے تو 100 سے زائد تاریخی جلدیں تیار ہوسکتی ہیں۔ انہوں نے صدر ایران سے خواہش کی کہ وہ ریسرچ کے کام اور ثقافتی آثار کے تحفظ کو منظوری دیتے ہوئے خصوصی فنڈس جاری کریں۔ انہوں نے کہا کہ ایرانی فلم ڈیویژن کو ہدایت دی جائے کہ وہ ہندوستان میں ایرانی عوام کی خدمات پر مبنی ڈاکیومنٹریز تیار کرے۔ دونوں ممالک کے آرکیالوجیکل سروے ڈپارٹمنٹس کے باہم اشتراک سے یہ کام انجام دیا جائے اور حکومت ایران کو فنڈس مختص کرنے چاہئے۔ مہدی مہدوی پور نے کہاکہ دونوں ممالک کے تاریخی، تمدنی اور ثقافتی تعلقات اس قدر گہرے ہیں کہ انہیں سفارتی تعلقات تک محدود نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے تعلقات میں دن بہ دن استحکام ہورہا ہے۔ صدر حسن روحانی کے دورۂ ہندوستان سے تعلقات کو مزید تقویت حاصل ہوگی۔ انہوں نے ڈاکٹر حسن روحانی کا استقبال کرنے پر حیدرآباد کے علماء و مشائخین اور نمائندہ شخصیتوں سے اظہار تشکر کیا۔

TOPPOPULARRECENT