Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں ٹریفک پر قابو پانے کے اقدامات

حیدرآباد میں ٹریفک پر قابو پانے کے اقدامات

فلائی اوورس ، اسکائی ویز اور کاریڈارس کی تعمیر کا منصوبہ : کے ٹی آر
حیدرآباد۔ 21 ۔ مارچ ( سیاست نیوز) وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ حیدرآباد میں بڑھتی ٹریفک پر قابو پانے کیلئے حکومت فلائی اوورس ، اسکائی ویز ، ایلیوٹیڈ کاریڈارس اور ہمہ منزلہ گریڈ سپریٹرس کی تعمیر کا منصوبہ رکھتی ہے۔ 25 ہزار کروڑ کی مالیت سے 4 مرحلوں میں ان پراجکٹس کو مکمل کیاجائے گا ۔ پہلے مرحلہ میں 20 جنکشنوں کو ترقی دینے کا منصوبہ ہے۔ کے ٹی آر نے تلنگانہ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران بتایا کہ 25 ہزار کروڑ کے منجملہ 8866 کروڑ روپئے پرانے شہر میں پراجکٹس پر خرچ کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں 54 ٹریفک جنکشن کو ترقی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے ، جن میں پہلے مرحلہ میں 21 جنکشنوں کو ترقی دی جائے گی، ان میں سے 4 جنکشن پرانے شہر میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 19 انفرااسٹرکچر کمپنیوں کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے ان پراجکٹس کی عمل آوری پر تجاویز حاصل کی گئی ہیں۔ کئی ملٹی نیشنل کمپنیوں نے ان پراجکٹس میں اپنی دلچسپی کا اظہار کیا ہے اور حکومت سے مزید تفصیلات طلب کی ہیں۔ کے ٹی آر نے امید ظاہر کی کہ بہت جلد ملٹی نیشنل کمپنیاں پراجکٹس کی تعمیر کیلئے آگے آئیں گی۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر حیدرآباد کو عالمی معیار کے شہر میں تبدیل کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں اور اس منصوبہ پر عمل آوری کا آغاز ہوچکا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ 4035 کروڑ روپئے کے کاموں کی انتظامی منظوری حاصل ہوچکی ہے۔ ارکان کے ضمنی سوالات کے جواب میں کے ٹی آر نے کہا کہ  ضرورت پڑنے پر پراجکٹس کے ڈیزائین میں اور عمل آوری کی ترجیحات میں تبدیلی کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پی وی نرسمہا راؤ فلائی اوور کو ٹولی چوکی تک توسیع دینے کی تجویز ہے اور یہ کام تیسرے مرحلہ میں مکمل کیا جائے گا۔ کے ٹی آر نے شہر کے مختلف پراجکٹس کے موضوع پر عوامی نمائندوں کے ساتھ اجلاس طلب کرنے سے اتفاق کیا۔ انہوں نے بتایاکہ 15 مارچ کو منعقدہ اجلاس میں انفارمیشن ٹکنالوجی انڈسٹریز اور دیگر شعبہ جات کی کمپنیوں کے ساتھ اجلاس میں 83 ہزار کروڑ کی تجاویز پیش کی گئیں۔ انہوں نے بتایا کہ موسیٰ ندی پراجکٹ کی تکمیل کے  لئے ماحولیاتی منظوری کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ پانی کے بہاؤ پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ حکومت پرانے شہر کی ترقی کی پابند ہے اور عوام نے بلدی انتخابات میں جس طرح تائید کا اظہار کیا، حکومت بھی اسی انداز سے ترقی کے اقدامات کرے گی۔ کے ٹی آر کے مطابق 20 جنکشنوں کی ترقی کا کام پانچ مراحل میں مکمل کیا جائے گا، جس میں ایل بی نگر ، اویسی ہاسپٹل، بہادر پورہ، عابڈس ، چادر گھاٹ ، ملک پیٹ اور دوسرے جنکشن شامل ہیں۔ شہر کے ارکان اسمبلی نے ترجیحی بنیادوں پر پرانے شہر کا کام جلد مکمل کرنے کا مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT