Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد و رنگاریڈی کے لیے کانگریس کی کمیٹیاں الگ الگ کرنے پر غور

حیدرآباد و رنگاریڈی کے لیے کانگریس کی کمیٹیاں الگ الگ کرنے پر غور

پرانے شہر کے انچارجس پر بھی سنجیدگی سے جائزہ ، پارٹی میں اختلافات کے باعث ہائی کمان کی تجویز
حیدرآباد ۔ 10 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : کانگریس پارٹی ہائی کمان جی ایچ ایم سی کے انتخابات میں پارٹی کی شکست کے بعد پارٹی میں بڑے پیمانے پر تبدیلی لانے حیدرآباد اور ضلع رنگاریڈی کو تنظیمی سطح پر دو ، دو حصوں میں تقسیم کرنے اور پرانے شہر کے لیے انچارج نامزد کرنے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ حالیہ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں کانگریس پارٹی کی شرمناک ہار کا کانگریس ہائی کمان نے سخت نوٹ لیا ۔ پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے میں سرحدی تنازعات اور پارٹی قائدین کے اختلافات اور گروپ بندیوں سے پارٹی کو نقصان پہونچنے کی ہائی کمان کو رپورٹ وصول ہوئی ہے ۔ بحیثیت صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی ڈی ناگیندر کو ضلع رنگاریڈی کے قائدین نے تسلیم کرنے سے انکار کردیا ۔ اور ڈی ناگیندر نے پرانے شہر کے علاوہ دوسرے علاقوں میں انتخابی مہم چلانے سے اپنے آپ کو دور رکھا ساتھ ہی ضلع رنگاریڈی کانگریس کمیٹی کے صدر مسٹر ملیش بھی اپنی ذمہ داری بخوبی نبھانے میں ناکام ہوگئے ۔ ڈی ناگیندر نے خود گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس کی صدارت سے استعفیٰ دیا جب کہ ہائی کمان کی ہدایت پر ملیش ضلع رنگاریڈی کانگریس کی صدارت سے مستعفی ہوگئے ۔ دونوں قائدین کے استعفوں کو کانگریس ہائی کمان نے قبول کیا ہے ۔ گریٹرحیدرآباد سے ہی پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے میں بڑے پیمانے پر تبدیلی لاتے ہوئے ہائی کمان پارٹی قائدین میں ذمہ داریاں تقسیم کرتے ہوئے 2019 تک پارٹی کو مستحکم کرنے کی حکمت عملی تیار کررہی ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ اس مرتبہ تبدیلی روایت سے ہٹ کر پارٹی میں سرحدی تنازعہ کو حل کرنے کے لیے ہائی کمان حیدرآباد اور سکندرآباد کے لیے علحدہ علحدہ کمیٹیاں تشکیل دینے کے علاوہ پرانے شہر کے لیے علحدہ کمیٹی بنانے یا انچارج بنانے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ ساتھ ہی ضلع رنگاریڈی کو اربن اور ضلع کی طرز پر دو کمیٹیاں تشکیل دینے کا جائزہ لیا جارہا ہے ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ پارٹی ہائی کمان صرف چند قائدین کی انتخابی مہم سے مطمئن ہیں ۔ پارٹی کے بیشتر قائدین نے شکست کے لیے ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے انہیں پارٹی کی انتخابی مہم میں شامل نہ کرنے یا اہمیت نہ دینے کی بھی شکایت کی ہے ۔ تاہم جنرل سکریٹری و انچارج تلنگانہ کانگریس امور مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے بھی اپنی طرف سے ایک رپورٹ صدر کانگریس مسز سونیا گاندھی اور نائب صدر مسٹر راہول گاندھی کو پیش کی ہے ۔ نارائن کھیڑ اسمبلی حلقہ کے ضمنی انتخابات کے بعد کانگریس پارٹی ہائی کمان کی جانب سے تلنگانہ کے سینئیر کانگریس قائدین کو دہلی طلب کر کے مزید مشاورت کرنے کا امکان ہے ۔ جس میں تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کی عاملہ تشکیل دینے پر بھی غور و خوض کیا جائے گا ۔۔

آئی آئی پی ای کا اسٹارٹ اپس پر ایک روزہ ایونٹ
حیدرآباد ۔ 10 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : انڈین انسٹی ٹیوٹ آف پبلک انٹرپرائزس ، شاہ میر پیٹ کیمپس پر 12 فروری کو اسٹارٹ اپس پر ایک روزہ کل ہند ایونٹ کا انعقاد کررہا ہے ۔ اس کا مقصد طلبہ کو ان کے اسٹارٹ اپس کے آغاز میں منصوبہ سازی فراہم کرنا ہے ۔ پروفیسر آر کے مشرا ڈائرکٹر انسٹی ٹیوٹ آف پبلک انٹرپرائزس نے ڈاکٹر سرینواس مورتی ، ڈین انڈین انسٹی ٹیوٹ آف پبلک انٹرپرائزس کے ہمراہ کہا کہ 40 ٹیمیں ملک بھر کے اعلیٰ انسٹی ٹیوٹس سے شرکت کرتے ہوئے نمائندگی کریں گی ۔ مسٹر پردیپ متل وائس پریسیڈنٹ ٹائی حیدرآباد اور مسٹر شیوا نائنار سی جی ایم ایس بی ایچ ، مس سری دیویا منیجنگ ڈائرکٹر گرلز ان ٹکنالوجی مہمانان اعزازی ہوں گے ۔ مزید تفصیلات کے لیے ڈاکٹر پراتھنا کمار اسٹارٹ اپ انڈیا کوآرڈینٹر سے فون نمبر 9000181276 یا مسٹر بھاسکر ایونٹ کوآرڈینٹر سے فون نمبر 9700111222 پر ربط کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT