Thursday , July 19 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد و رنگا ریڈی کے لیے وقف بورڈ کی خصوصی ٹیمیں

حیدرآباد و رنگا ریڈی کے لیے وقف بورڈ کی خصوصی ٹیمیں

وقف فنڈ اور کرایوں کی وصولی کیلئے صدرنشین محمد سلیم کی ہدایت
حیدرآباد۔12۔ فروری (سیاست نیوز) حیدرآباد اور رنگا ریڈی میں اوقافی اداروں کے کرایہ جات اور وقف فنڈ کی وصولی کیلئے تلنگانہ وقف بورڈ نے تین خصوصی ٹیمیں تشکیل دی ہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے آج عہدیداروں کے ساتھ کرایہ جات کی وصولی کا جائزہ لیا ۔ انہوں نے وقف فنڈ اور کرایوں کی وصولی میں عہدیداروں کی سست روی پر ناراضگی ظاہر کی اور ہدایت دی کہ جاریہ مالیاتی سال کے اختتام تک مکمل بقایا جات وصول کرلئے جائیں۔ انہوں نے چیف اگزیکیٹیو آفیسر منان فاروقی کو خصوصی ٹیمیں تشکیل دینے کی ہدایت دی۔ 15 ملازمین کو خصوصی ٹیموں میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور پانچ ملازمین پر مشتمل ایک ٹیم کے لحاظ سے تین ٹیموں کو آج ہی فیلڈ پر روانہ کردیا گیا۔ حیدرآباد اور رنگا ریڈی میں واقع بیشتر اوقافی ادارے پابندی سے وقف فنڈ ادا نہیں کر رہے ہیں۔ اس کے علاوہ اوقافی جائیدادوں کے کرایہ دار کئی ماہ کا کرایہ باقی ہے۔ ان حالات میں وقف بورڈ کی آمدنی متاثر ہورہی ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کے ذریعہ مختلف فلاحی کام انجام دیئے جاسکتے ہیں۔ انہوں نے خصوصی ٹیموں کو ہدایت دی کہ وہ متولیوں، مینجنگ کمیٹیوں اور کرایہ داروں سے ملاقات کرتے ہوئے بقایا جات کی ادائیگی کیلئے راضی کریں۔ صدرنشین کا عہدہ سنبھالنے کے بعد محمد سلیم نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور وقف بورڈ کی آمدنی میں اضافہ پر توجہ مرکوز کی ہے۔ واضح رہے کہ حالیہ عرصہ میں مکہ مدینہ علاء الدین وقف اور نبی خانہ مولوی اکبر کے کرایہ داروں سے بات چیت کیلئے خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی تھیں لیکن یہ ٹیمیں مارکٹ ریٹ کے اعتبار سے کرایہ حاصل کرنے میں ناکام ثابت ہوئیں۔ دونوں جائیدادوں کے تحت سینکڑوں کرایہ دار ہیں، جو معمولی کرایہ ادا کر رہے ہیں۔ بورڈ نے مارکٹ ریٹ کے اعتبار سے کرایہ میں اضافہ کی مہم شروع کی تھی لیکن کامیابی نہیں ملی۔ بورڈ نے کرایہ میں اضافہ سے انکار کرنے والے کرایہ داروں کے خلاف تخلیہ کی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT