Tuesday , July 17 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد کنکریٹ کے جنگل میں بدل رہا ہے

حیدرآباد کنکریٹ کے جنگل میں بدل رہا ہے

یوروپین اسپیس ایجنسی سے لی گئی خلائی تصویر میں شہر کو لاحق خطرات کی نشاندہی

حیدرآباد ۔ 15 اپریل (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد کی ہر گلی میں تقریباً ہمہ منزل عمارتیں دکھائی دیتی ہیں اور شاندار گھروں کی تعمیر کو آج سماج میں اپنے مقام اور رتبے کی نشانی تصور کیا جارہا ہے لیکن ماحولیات کے اعتبار سے اس کے جو خطرناک نتائج ہوسکتے ہیں اسے سمجھنے کیلئے یوروپین اسپیس ایجنسی (ای ایس اے) کی جانب سے حیدرآباد کی خلاء سے لی گئی تصویر کافی ہے۔ ای ایس اے نے سینٹینل ۔ 2 اے کو 2015ء میں خلاء میں داغا تھا تاکہ وہ کرہ ارض پر ہونے والی تبدیلیوں کا مشاہدہ کرسکے۔ دریں اثناء یوروپین اسپیس ایجنسی نے رواں ہفتے سینیٹنل 2 اے سے جو تصاویر حیدرآباد کی خلا سے لی ہیں وہ شہریوں کو خواب غفلت سے جاگنے کیلئے کافی ہے۔ مذکورہ ایجنسی نے ٹوٹر اکاؤنٹ کے ذریعہ تصاویر شائع کی ہیں جس میں حیدرآباد کا زیادہ تر حصہ زرد اور بھورا رنگ سے ظاہر ہورہا ہے جبکہ ہلکا سبز رنگ بہت کم ہے جوکہ ہریالی کھیت کھلیاں اور درختوں کی نشاندہی کرتا ہے اس کے علاوہ نیلا رنگ بھی کہیں کہیں دکھائی دیتا ہے جو موسیٰ ندی عثمان ساگر حسین ساگر اور دیگر پانی کے ذخائر کی نشاندہی کررہا ہے۔ یوروپین اسپیس ایجنسی نے ان رنگوںکی وضاحت بھی کردی کہ زرد اور بھورا رنگ عمارتوں کی نشاندہی کرتا ہے جس نے حیدرآباد کی سرزمین پر تشویشناک حد تک اپنا قبضہ جما لیا ہے۔ روشن نیلا رنگ موسیٰ ندی اور دیگر آبی ذخائر کی نشاندہی کررہا ہے جبکہ ہرا رنگ پارکوں کی شناخت ہے۔ تصویر میں سب سے تشویشناک پہلو دل کی شکل کا آبی ذخیرہ حسین ساگر ہے جسے زراعت اور صنعت کے فاضل مادوں کی وجہ سے بے انتہاء آلودہ دکھایا گیا ہے۔ مذکورہ ایجنسی کی جانب سے یہ تصاویر انتہائی شاندار کیمروں سے حاصل کی گئی ہیں جس میں راجیو گاندھی انٹرنیشنل ایرپورٹ کے علاوہ دیگر کئی اہم مقامات کی نشاندہی بھی کی گئی ہے۔ سٹیلائٹ سے حاصل کردہ تصاویر کا تشویشناک پہلو یہ ہیکہ ہر گذرتے دن میں تاریخی شہر کانکریٹ کے جنگل میں تبدیل ہورہا ہے جس سے شہر حیدرآباد کا درجہ حرارت کافی بڑھ رہا ہے کیونکہ گرم ہوا جب اوپر اٹھتی ہے تو فلک بوس عمارتیں ہونے کی وجہ سے یہ محلوں اور بستیوں میں ہی گھومتی ہیں جس سے درجہ حرارت نہ صرف بڑھ جاتا ہے بلکہ یہ گرم ہوا کئی بیماریوں کی وجہ بھی بنتی ہے۔ حیدرآباد کو خواب غفلت سے جاگتے ہوئے شجرکاری مہم کے آغاز اور اس میں شدت لانی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT