Thursday , January 17 2019

حیدرآباد کی پیدائش رکھنے والوں کو حیدرآباد پولیس میں تقررات

ضلع واری سطح پر کانسٹیبل اور سب انسپکٹرس کے تقررات زونل واری سطح پر ہوں گے

ضلع واری سطح پر کانسٹیبل اور سب انسپکٹرس کے تقررات زونل واری سطح پر ہوں گے
حیدرآباد ۔ 18 اپریل (سیاست نیوز) حیدرآباد سٹی پولیس تقررات میں فری زون کا کوئی لزوم نہیں ہوگا اور نہ ہی عوام کو شک و شبہات میں مبتلاء ہونے کی ضرورت ہے۔ کانسٹیبل کے تقررات ضلع واری اساس پر اور سب انسپکٹر کے تقررات زونل سطح پر کئے جائیں گے۔ حیدرآباد کو چھٹواں زون تصور کیا جائے گا۔ پولیس تقررات کا عمل شروع ہونے سے قبل پھر ایک بار حیدرآباد فری زون ہونے کی افواہیں گشت کررہی تھیںجس کی محکمہ پولیس نے تردید کی ہے۔ پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں نے بتایا کہ 14 ایف کی منسوخی کے بعد اب فری زون کا لزوم ختم ہوگیا ہے۔ حیدرآباد میں پیدا ہونے والی ہی پولیس تقررات کیلئے درخواست داخل کرسکتے ہیں۔ اسناد کی مکمل جانچ پڑتال کے بعد ہی پولیس تقررات کو یقینی بنایا جائے گا۔ متحدہ آندھراپردیش میں حیدرآباد کو فری زون قرار دینے کی وجہ سے تقررات میں ہمیشہ مقامی نوجوانوں سے ناانصافی ہوا کرتی تھی۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد یہ ناانصافی بھی ختم ہوجائے گی۔ ریاست کی تقسیم سے قبل ہی تلنگانہ تحریک کے دوران حیدرآباد کو فری زون قرار دینے کے خلاف مہم چلائی گئی تھی جس پر مرکزی حکومت دستور کی دفعہ 14F کو منسوخ کردیا تھا جس کے بعد حیدرآباد کو فری زون سے ہٹا دیا اور چھٹویں زون کی طرح تصور کیا جارہا ہے۔ محکمہ پولیس میں کانسٹیبل کے تقررات اضلاع کویونٹ بنا کر کئے جائیںگے جبکہ سب انسپکٹرس کے تقررات زونل واری اساس پر کئے جائیں گے۔ تلنگانہ کے اعلیٰ پولیس عہدیداروں نے بتایا کہ پولیس کے جو بھی تقررات ہوں گے اس میں مقامی نوجوانوں کو ہی اہمیت دی جائے گی۔ کانسٹیبل کے تقررات میں 80 فیصد تقررات میں مقامی افراد کو ترجیح دی جائے گی۔ 20 فیصد تقررات میں تلنگانہ کے دوسرے اضلاع کے افراد کو اہمیت دی جائے گی۔ سب انسپکٹر وںکے تقررات میں حیدرآباد کو چھٹواں زون تصور کیا جائے گا اور مقامی افراد کو 70 فیصد اہمیت دی جائے گی۔ باقی 30 فیصد کوٹہ کیلئے 5 اور 6 زون کے امیدوار بھی اپنی قسمت آزما سکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT