Sunday , November 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / حیدرآباد اور ممبئی دونوںٹیموںکی توجہ آج جیت پرمرکوز

حیدرآباد اور ممبئی دونوںٹیموںکی توجہ آج جیت پرمرکوز

آئی پی ایل 2016ء

حیدرآباد۔17 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کھلاڑیوں کی چوٹ اور ناقص فارم سے پریشان رہی سن رائزرس حیدرآباد اور نشیب و فراز کے شکار موجودہ چیمپئن ممبئی انڈینس کی ٹیمیں آئی پی ایل سیزن9 میں پیر کو یہاں جب آمنے سامنے ہوں گی تو ان کی نگاہ اپنی مہم پٹری پر لانے پر ٹکی ہوں گی۔حیدرآباد کی ٹیم اپنے سرکردہ کھلاڑیوں یوراج سنگھ، کین ولیمسن اور اشیش نہرا کے زخمی ہونے سے کمزور پڑ گئی ہے۔ اس نے ابھی تک اپنے دونوں میچ گنوائے ہیں۔ رائل چیلنجرس بنگلور نے اسے 45 جبکہ کولکتہ نائٹ رائڈرس نے 8وکٹ سے شکست دی۔ زخمی کھلاڑیوں کی غیر موجودگی کے علاوہ سن رائزرس کیلئے سلامی بیٹسمین شیکھر دھون کی ناقص فارم بھی تشویش کا موضوع ہے لیکن ایون مورگن کی کل آر کے خلاف 43 گیندوں پر کھیلی گی۔ 51 رنز کی اننگز سے اسے راحت ملی ہوگی۔ نمن اوجھا نے بھی 37 رنز بنائے تھے اور اس وکٹ کیپر بیٹسمین سے ٹیم کو آگے بھی اس طرح کی کارکردگی کی توقع کی جائے گی۔

سن رائزر س کی ٹیم کپتان ڈیوڈ وارنر پر بہت زیادہ انحصار ہے۔ ان کے علاوہ دھون، مویجیس ہینرکس، مورگن، لیمپ ہڈا اور اوجھا کو بڑا کردار ادا کریں گے تاکہ وہ مشکل اسکور کھڑا کر سکیں۔ بولنگ میں اگرچہ ٹیم کو نہرا کی کمی محسوس ہوگی جو اچھے فارم میں چل رہے ہیں۔ سن رائزرس کے پاس اگرچہ بھونیشور کمار، مستپھجر الرحمن، کرن شرما، ابھیمنیو متھن اور بردر سر کے طور پر کچھ اچھے بولر ہیں۔ جہاں تک ممبئی انڈینس کا سوال ہے تو اس نے اب تک تین میچوں میں سے صرف ایک میں کامیابی حاصل کی ہے اور اپنی مہم پٹری پر لانے کیلئے اسے ایک جیت کی اشد درکار ہے۔ممبئی کو اگر سن رائزرس کیلئے پریشانیاں کھڑی کرنی ہیں تو کپتان روہت شرما کو ویسی ہی شفٹ کھیلنی ہوگی جیسی انہوں نے آر کے خلاف (ناٹ آوٹ 84 رن) کھیلی تھی۔ ان کے علاوہ بڑی ہٹر کیرون پولارڈ اور انگلینڈ کے جوس بٹلر کو بھی اچھی کارکردگی کرنا ہوگا۔ اس کے دوسرے باصلاحیت بیٹسمین امباتی رائڈو، دل پنڈیا اور پارتھیو پٹیل کو بھی مفید شراکت دینا ہوگا۔ سن رائزرس کیلئے مسلسل دو شکست کے بعد اب جیت کی راہ پر حاصل کرنا ضروری ہے اور کوچ ٹام موڈی نے بھی کہا کہ یہ ٹیم واپسی کر سکتی ہے۔ انہوں نے کہا، کچھ شعبے ہیں جن ہمیں بہتری کی ضرورت ہے۔ ابھی ہم نے دو میچ کھیلے ہیں۔ ہمیں اپنے کمزور فریقوں پر توجہ دے کر ان پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ میں اگرچہ اب بھی مثبت ہوں۔ ہم واپسی کر سکتے ہیں۔ ہم نے گزشتہ سیشن میں ایسا دیکھا ہے۔ گزشتہ سیشن میں ممبئی انڈینس کے ساتھ ایسا ہوا تھا۔

TOPPOPULARRECENT