Wednesday , November 21 2018
Home / شہر کی خبریں / حیدرآباد میں پینے کے پانی کی قلت نہیں: حکومت

حیدرآباد میں پینے کے پانی کی قلت نہیں: حکومت

حیدرآباد 27 مارچ (سیاست نیوز) ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر نے موسم گرما کے دوران حیدرآباد میں پینے کے پانی کی کوئی قلت نہ ہونے کاد عویٰ کرتے ہوئے کہاکہ موسم گرما کیلئے ماسٹر پلان تیار کیا گیا ہے۔ 15 کروڑ روپئے کے مصارف سے 120 بستیوں میں ٹینکرس سے مفت پینے کا پانی سربراہ کرتے ہوئے 30 ہزار خاندان کو راحت فراہم کی جائے گی۔ کے ٹی آر نے آج اسمبلی کے کمیٹی ہال میں موسم گرما کے دوران پینے کے پانی کی سربراہی کا جائزہ لیا جس میں میئر گریٹر حیدرآباد بی رام موہن کے علاوہ حیدرآباد میٹرو واٹر ورکس اور جی ایچ ایم سی کے عہدیداروں نے شرکت کی۔ وزیر بلدی نظم و نسق نے کہاکہ ماضی کے بہ نسبت پانی کی قلت پر قابو پالیا گیا ہے۔ جاریہ سال 100 ایم ایل ڈی پانی زیادہ ذخیرہ کرنے کی گنجائش فراہم کی گئی ہے۔ دریائے کرشنا و گوداوری سے شہر حیدرآباد کو پانی سربراہ کیا جارہا ہے۔ ان سہولتوں سے استفادہ کرتے ہوئے شہر کے کسی بھی علاقے کو پانی سربراہ کیا جاسکتا ہے۔ ایک ماسٹر پلان تیار کرنے کی وزیر نے عہدیداروں کو ہدایت دی۔ ماسٹر پلان کے تحت پانی کی سربراہی کو یقینی بنانے کے لئے دو ذخیرہ آب کا احاطہ کرنے کی ہدایت دی اور بتایا کہ سارے شہر کو 600 ایم ایل ڈی پانی سربراہ کرنے کی ضرورت ہے۔ تقریباً 120 بستیوں میں واٹر ٹینکرس کے ذریعہ 15 کروڑ روپئے کے مصارف سے پانی سربراہ کیا جائے گا جس سے 30 ہزار خاندانوں کو موسم گرما میں راحت فراہم ہوگی۔ مضافاتی میونسپلٹیز میں بھی پینے کے پانی کی سربراہی کا کے ٹی آر نے جائزہ لیا۔ پراجکٹس کی تعمیرات کے لئے سڑکوں کی کھدائی پر عوام سے وصول ہونے والی شکایتوں پر فوری ردعمل کا اظہار کرنے اور سڑکوں کو درست کرنے کی عہدیداروں کو ہدایت دی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT