خاتون انسپکٹر کے یونیفارم میں شاہ رخ کے ساتھ رقص پر تنازعہ

کانگریس اور بی جے پی کی جانب سے مذمت، ممتا بنرجی نے سیاست میں داخلہ لیکر غلطی کی

کانگریس اور بی جے پی کی جانب سے مذمت، ممتا بنرجی نے سیاست میں داخلہ لیکر غلطی کی
کولکتہ ۔ 11 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام) سیاستدانوں نے ایک خاتون پولیس اہلکار کے بالی ووڈ ایکٹر شاہ رخ خان کے ساتھ یونیفارم میں رقص کرنے پر زبردست تنقید کی ہے ۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ مغربی بنگال کو بھی ہدف تنقید بنایا جو اس وقت وہاں موجود تھیں۔ یاد رہے کہ کولکتہ پولیس کاسالانہ ثقافتی پروگرام نیتاجی انڈور اسٹیڈیم میں منعقد کیا گیا تھا جہاں خاتون سب انسپکٹر سمپا ہلدر نے شاہ رخ حان کی فلم جب تک ہے جان کے ایک گانے کی دھن پر رقص کیا تھا اور یہ تماشہ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی بھی ایک گیلری میں بیٹھی ہوئی دیکھ رہی تھیں۔ دوسری طرف سابق سٹی پولیس کمشنر نروپم سوم نے کہا کہ خاتون سب انسپکٹر نے یونیفارم پہن کر رقص کرتے ہوئے اس کے تقدس کو پامال کیا ہے ۔ اگر وہ برسرکار ہوتے تو کسی بھی آفیسر کو اس طرح یونیفارم پہن کر رقص کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دیئے ۔ اگر خاتون سب انسپکٹر سادہ لباس میں رقص کرتیں تو انہیں کوئی اعتراض نہ ہوتا۔ انہیں تعجب اس بات پر ہے کہ خاتون سب انسپکٹر کے سینئرس خاموش کیوں رہے؟ سابق آئی پی ایس آفیسر سمیر گنگوپادھیائے نے بتایا کہ پولیس قاعدہ کے مطابق کسی بھی پولیس اہلکار کو یونیفارم میں رقص کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی جو کچھ انہوں نے کل دیکھا اس سے یہ اندیشہ پیدا ہوگیا ہے کہ کہیں ہمارے پولیس افسران بھی چلبل پانڈے کی طرح رقص کرنا نہ شروع کردیں۔ ان کا اشارہ سلمان خان کی فلم دبنگ کی جانب تھا جہاں سلمان نے ایک پولیس انسپکٹر کا رول کیا تھا ۔ کانگریس کے ریاستی صدر ادھیر رنجن چودھری نے بھی اس واقعہ کی مذمت کرتے ہ وئے وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی پر تنقیدیں کیں اور پولیس آفیسر کو یونیفارم میں رقص کرنے کی اجازت دیتے ہوئے دراصل ملک کے دستور سے کھلواڑ کیا گیا ہے ۔ ملک کا دستور کسی بھی آفیسر کو یونیفارم پہن کر رقص کرنے اور یونیفارم کے تقدس کو پامال کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔ بی جے پی کے ریاستی صدر راہول سنہا نے کہا ترنمول کانگریس کی جانب سے منعقد کئے جانے والے زیادہ تر پروگرامس میں فلم ایکٹروں کی شرکت عام بات ہوتی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ممتا بنرجی نے سیاست میں داخلہ لیکر غلطی کی ہے ۔ لہذا وہ اس غلطی کو جلد سے جلد محسوس کرتے ہوئے اگر سیاست سے کنارہ کش ہوجائیں تو یہ مغربی بنگال کے عوام پر احسان ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT