Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / خانم پیٹ اور گٹلا بیگم پیٹ وقف اراضیات کے تحفظ کی ہدایت

خانم پیٹ اور گٹلا بیگم پیٹ وقف اراضیات کے تحفظ کی ہدایت

الحاج محمد سلیم چیرمین تلنگانہ وقف بورڈ کا دورہ ، خانم پیٹ اراضی پر وقف بورڈ کی کوشش ناکام
حیدرآباد۔26 مئی (سیاست نیوز) صدر نشین تلنگانہ وقف بورڈ محمد سلیم نے آج خانم میٹ اور گٹلا بیگم پیٹ میں اوقافی اراضیات کا معائنہ کیا اور ان کے تحفظ کے سلسلہ میں عہدیداروں کو ہدایات جاری کیں۔ ڈپٹی میئر بابا فصیح الدین، چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایم اے منان فاروقی اور دیگر عہدیداروں کے ہمراہ صدرنشین وقف بورڈ خانم میٹ پہنچے جہاں ایک ایکڑ 15 گنٹے اوقافی اراضی پر غیر مجاز تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے۔ خاتون آئی اے ایس عہدیدار سری لکشمی کی جانب سے ان تعمیرات کی اطلاع ملی ہے۔ اس سلسلہ میں وقف بورڈ نے متعلقہ پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرائی تھی لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ صدرنشین وقف بورڈ کے دورے کے موقع پر بھی تعمیراتی کاموں کا سلسلہ جاری تھا اور اس سلسلہ میں مزید معلومات حاصل کئے بغیر ہی صدرنشین وقف بورڈ وہاں سے گٹلا بیگم پیٹ کے لیے روانہ ہوگئے۔ واضح رہے کہ خانم میٹ کی قیمتی اراضی پر غیر مجاز تعمیرات کو روکنے کے لیے وقف بورڈ کی تمام کوششیں ناکام ثابت ہوئی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اعلی سطح پر مذکورہ عہدیدار کو تعمیرات جاری رکھنے کی اجازت حاصل ہے۔ گٹلا بیگم پیٹ کی مسجد میں نماز جمعہ ادا کرنے کے بعد صدرنشین وقف بورڈ نے اطراف کی وقف اراضی کا معائنہ کیا۔ انہوں نے اس موقع پر مسجد کے ذمہ داروں کی جانب سے تیار کردہ رمضان المبارک کے نظام العمل کو جاری کیا۔ انہوں نے وقف اراضی کو پارکنگ کے طور پر استعمال کرنے کی مخالفت کی اور کنسٹرکشن کمپنی کو ہدایت دی کہ وہ فوری اس اراضی سے دوری اختیار کرے۔ اس سلسلہ میں متعلقہ ایم آر او سے شکایت کی جائے گی۔ عدالت کی جانب سے حکم التوا کے باوجود گٹلا بیگم پیٹ میں تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے۔ محمد سلیم نے کہا کہ وہ دونوں اراضیات کے تحفظ کے لیے ہر ممکن قانونی قدم اٹھائیں گے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے ناجائز قبضوں کی برخاستگی کے لیے پولیس میں شکایت درج کرنے کا تیقن دیا اور مقامی افراد کے مسائل کی سماعت کی۔ مصلیوں نے صدرنشین وقف بورڈ سے خواہش کی کہ وہ اراضی کے تحفظ کے لیے اقدامات کریں۔ انہوں نے مسجد کے ہفتہ واری عطیات کے بارے میں بھی تفصیلات پیش کرنے کی ہدایت دی کہ اس رقم کو کہاں خرچ کیا جارہا ہے۔ سابقہ کمیٹی نے مسجد کے نام پر ابھی تک بینک اکائونٹ نہیں کھولا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد فی الوقت وقف بورڈ کی راست نگرانی میں ہے اور اس سلسلہ میں جلد احکامات جاری کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT