Saturday , January 19 2019

خانگی اسکولس جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا انتباہ

مسائل کی عدم یکسوئی پر تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان
حیدرآباد ۔ 26 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ کے مسلمہ خانگی مدارس کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے مسائل کی عدم یکسوئی پر آئندہ تعلیمی سال سے تعلیم بند کردینے کا انتباہ دیا ہے ۔ یاد رہے کہ مسلمہ خانگی مدارس کے انتظامیہ جائیداد ٹیکس کے نظام کے خلاف احتجاج کررہے ہیں اور جائیداد ٹیکس کے نظام میں تبدیلی کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے ان مسلمہ اسکولس پرکمرشیل جائیداد ٹیکس کا حصول لازمی کردیا ہے اور برقی اور پانی کے بلز بھی کمرشیل قیمتوں پر لازمی کردئیے گئے ہیں ۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چیرمین مسٹر نرسنگ راؤ نے بتایا کہ حکومت معمولی فیس وصول کرنے والے مسلمہ خانگی اسکولس اور لاکھوں روپئے وصول کرنے والے خانگی اسکولس پر یکساں نظام و شرائط عائد کرنا چاہتی ہے جو ناقابل قبول ہے ۔ اس نظام سے اسکولس بند کرنا پڑے گا جو انتظامیہ کے لیے کافی نقصان دہ ثابت ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ خانگی مسلمہ اسکولس کے مسائل پر ریاستی وزیر کے ٹی راما راؤ نے تیقن دیا تھا کہ وہ مسئلہ کی یکسوئی کے اقدامات کریں گے تاہم 31 مارچ تک مہلت دی گئی ہے ۔ اگر 31 مارچ تک مسائل حل نہیں ہوتے ہیں تو وہ آئندہ تعلیمی سال سے تعلیم بند کردیں گے ۔ اس موقع پر چندر شیکھر کوکنوینر اور سری ہری کوکنوینر و دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT