Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی اسکولس فیس میں حکومت کے عدم کنٹرول پر ریاست گیر احتجاج

خانگی اسکولس فیس میں حکومت کے عدم کنٹرول پر ریاست گیر احتجاج

حیدرآباد میں ڈی ای آفس کا محاصرہ ، بی جے پی اور یووا مورچہ کے کارکن گرفتار
حیدرآباد ۔ 6 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : ریاست تلنگانہ بشمول شہر حیدرآباد میں خانگی مدارس میں وصول کی جانے والی من مانی فیس پر قابو پانے اور اس طریقہ کار کا تدارک کرنے میں حکومت کی ناکامی کے خلاف بی جے پی یووا مورچہ کی جانب سے بطور احتجاج اضلاع مستقروں اور بالخصوص گریٹر حیدرآباد کمیٹی کے زیر اہتمام ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر حیدرآباد ( واقع احاطہ عالیہ جونیر کالج فتح میدان) کے دفتر کا محاصرہ کیا گیا بلکہ زبردست احتجاجی مظاہر کیا گیا ۔ اس موقعہ پر بی جے پی یووا مورچہ کے احتجاجی کارکن زبردست نعرہ بازی کرتے ہوئے ڈی ای او آفس میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی لیکن پولیس نے فوری مداخلت کرتے ہوئے احتجاجی کارکنوں کو دفتر میں داخل ہونے سے روکدیا ۔ جس پر احتجاجی ڈی ای او آفس کے روبرو بیٹھ کر کافی دیر تک احتجاج کیا ۔ احتجاج میں پیدا ہوتی ہوئی شدت کو دیکھتے ہوئے پولیس نے احتجاجی کارکنوں کو حراست میں لیتے ہوئے انہیں پولیس گاڑیوں کے ذریعہ پولیس اسٹیشن کو منتقل کردیا ۔ اس موقعہ پر گریٹر حیدرآباد بی جے پی یووا مورچہ صدر ونئے کمار نے پولیس زیادتی کی پر زور مخالفت کرتے ہوئے بتایا کہ غریب طلباء کو من مانی فیس کی وصولی سے درپیش مسائل کے خلاف احتجاج کرنے پر پولیس احتجاجیوں کے ساتھ ظلم و زیادتیاں کر کے گرفتار کر کے پولیس اسٹیشن منتقل کررہی ہے ۔ انہوں نے حکومت کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ من مانی وصول کی جانے والی فیس کا تدارک کرنے کے لیے حکومت نے صرف کمیٹی تشکیل دینے پر ہی اکتفا کیا لیکن کوئی عملی اقدامات نہیں کئے ۔ انہوں نے من مانی فیس کی وصولی کے باعث غریب طلباء کے والدین کافی مالی دشواریوں سے دوچار ہورہے ہیں ۔ ونئے کمار نے خانگی مدارس میں من مانی طور پر وصول کی جانے والی فیس کے طریقہ کار کو روک لگانے کا حکومت سے پر زور مطالبہ کیا ۔ بصورت دیگر ریاستی سطح پر بڑے پیمانے پر احتجاج منظم کرنے کا سخت انتباہ دیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT