Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / خانگی تعلیمی ادارہ جات کی تحقیقات کی سخت مخالفت

خانگی تعلیمی ادارہ جات کی تحقیقات کی سخت مخالفت

بقایہ جات کو فوری جاری کرنے کا مطالبہ ، صدر تلنگانہ پی سی سی اتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے خانگی تعلیمی اداروں کی ویجلنس اور پولیس سے تحقیقات کرانے کی سخت مخالفت کی اور تعلیمی اداروں کے بند کی تائید کی ۔ بقایہ جات فوری جاری کرنے کا حکومت سے مطالبہ کیا ۔ گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہا کہ حکومت پولیس کے ذریعہ تعلیمی اداروں کی تحقیقات کراتے ہوئے تعلیمی نظام کو تباہ و برباد کررہی ہے ۔ ریاست میں 6300 انٹر ، ڈگری کورسیس سے متعلق کالجس موجود ہیں حکومت ان کالجس کو 3600 کروڑ روپئے کی فیس ری ایمبرسمنٹ ادا کرنا باقی ہے ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے اسمبلی میں جاریہ ماہ اپریل کے اواخر تک تمام کالجس کو بقایہ جات ادا کرنے کا وعدہ کیا تھا وعدے کے مطابق بقایہ جات ادا کرنے کے بجائے ویجلنس اور پولیس کے ذریعہ تعلیمی اداروں کی تحقیقات کرائی جارہی ہے ۔ بقایہ جات کی عدم ادائیگی سے غریب طلبہ کے تعلیم پر اثر پڑرہا ہے تعلیمی اداروں پر پولیس کی 700 ٹیمیں دھاوا کرتے ہوئے تحقیقات کررہی ہے ۔ اگر حکومت کو تعلیمی اداروں کی دیانتداری پر کوئی شک ہے تو وہ محکمہ تعلیم کے عہدیداروں کی ٹیم تشکیل دیتے ہوئے تحقیقات کرائے ۔ ویجلنس اور پولیس کی تحقیقات پر تعلیمی ادارے کا وقار متاثر ہوسکتا ہے ۔ حکومت کے اس فیصلے کے خلاف تعلیمی اداروں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے تعلیمی ادارے آج سے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ کانگریس پارٹی بند کی مکمل تائید و حمایت کرتی ہے ۔ حکومت فوری بقایہ جات ادا کریں اور پولیس تحقیقات سے فوری دستبرداری اختیار کریں کانگریس پارٹی اور خانگی تعلیمی اداروں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی تحقیقات کے خلاف نہیں ہے تاہم تحقیقات محکمہ تعلیم کے عہدیداروں سے کرائے ناکہ پولیس اور ویجلنس سے کرائے ۔ محکمہ تعلیم کے عہدیداروں سے تحقیقات کرائی جائے تو خانگی تعلیمی ادارے تحقیقات میں مکمل تعاون کرنے کے لیے تیار ہے ۔ لہذا حکومت اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT