Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / خانگی دواخانوں میں اندرون دواخانہ ادویات خریدی پر زور

خانگی دواخانوں میں اندرون دواخانہ ادویات خریدی پر زور

جنرک ادویات کے بجائے مہنگی دوائیں خریدنے ڈاکٹرس کا دباؤ ، مریضوں کو مشکلات
حیدرآباد۔6اپریل(سیاست نیوز) خانگی دواخانو ںمیں انتظامیہ کی جانب سے دواخانہ کے اندر موجود فارمیسی سے ہی ادویات کی خریداری کیلئے دباؤ اور فارمیسی میں موجود ادویات ہی تجویز کئے جانے سے مریضوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کہ اور شہر کے بیشتر کارپوریٹ اور خانگی دواخانوں سے اس بات کی شکایات موصول ہورہی ہیں کہ دواخانہ کے انتظامیہ کی جانب سے ایسی ہی ادویات تجویز کی جا رہی ہیں جو کہ اندرون دواخانہ دستیاب ہوتی ہیں اور بعض مقامات پر تو ڈاکٹرس کے کیبن میں ادویات منگوا کر حوالہ کی جانے لگی ہیں ۔بتایاجاتاہے کہ خانگی دواخانوں کی جانب سے کئے جانے والے اس عمل سے مریضوں اور ان کے رشتہ داروں کو شدیدمشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔بتایاجاتاہے کہ دواخانہ کے انتظامیہ کی جانب سے دواخانہ میں خدمات انجام دینے والے ڈاکٹرس کو اس بات کی تاکید کی جا رہی ہے کہ وہ ان ادویات کی تجویز کو ہی ترجیح دیں جو ادویات دواخانہ کی فارمیسی میں موجود ہیں۔ دونوں شہروں میں کئی دواخانوں سے موصول ہونے والی اس شکایت کے متعلق محکمہ صحت کے عہدیداروں کو جائزہ لینے کی ضرورت ہے کیونکہ ریاستی و مرکزی حکومت کی جانب سے جینریک ادویات کے فروغ کیلئے اقدامات کی بات کر رہی ہے لیکن اس کے برعکس خانگی و کارپوریٹ دواخانو ںمیں جینریک ادویات کے بجائے مہنگی اور بڑی کمپنیوں کے ادویات تجویز کئے جا رہے ہیں۔ اس سلسلہ میں ڈاکٹر س کا اس مسئلہ پر کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے ایک طرف جینریک ادویات کے فروغ کی تاکید و ہدایت دی جاتی ہے اور دوسری جانب طبی سیاحت کے نام پر ریاست میں بڑی ادویات ساز کمپنیو ںکو اراضیات فراہم کرتے ہوئے ریاست میں میڈیکل ٹورازم کے فروغ کی بات کی جا رہی ہے اسی لئے حکومت کے موقف کے متعلق شعبۂ طب ہی کئی عہدیدار اور خود خانگی و کارپوریٹ دواخانوں کے ذمہ داروں مخمصہ میں ہیں کہ حکومت کی کس پالیسی کو اختیار کیا جائے ۔خانگی و کارپوریٹ اداروں کی جانب سے اختیار کئے جانے والے اس رویہ کے متعلق شہریوں کاکہناہے کہ کارپوریٹ دواخانو ںکے علاوہ بعض ایسے دواخانوں میں بھی یہی رویہ ہے جو تنظیموں اور اداروں کی جانب سے چلائے جاتے ہیں ۔ محکمہ صحت کے عہدیداروں کا کہناہے کہ مریضوں اور ان کے رشتہ داروں کو کسی ایک فارمیسی سے ادویات کی خریداری کا پابند بنایا جانا درست نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT