Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / خانگی کالجوں میں طلباء پر شدید ذہنی دباؤ، خصوصی کلاس کے نام پر دن رات تعلیم سے طلباء بیزار

خانگی کالجوں میں طلباء پر شدید ذہنی دباؤ، خصوصی کلاس کے نام پر دن رات تعلیم سے طلباء بیزار

حیدرآباد ۔ 19 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : والدین بچوں کو تعلیمی اداروں میں داخل کرتے وقت انتظامیہ سے کہتے ہیں کہ ہمارے بچوں کو بہترین تعلیم فراہم کی جائے ۔ والدین کی اس خواہش کی آڑ میں شہر کے بعض جونیر کالجس طلبہ کو دن رات یہاں تک کہ ہفتہ اور اتوار کے دن بھی صبح 6 تا رات 11 بجے تک کلاسیس چلا رہے ہیں جس کی وجہ سے طلبہ شدید ذہنی تناؤ میں مبتلا ہورہے ہیں اور ذہنی تناؤ کی وجہ سے کئی طلبہ ترک تعلیم بھی کررہے ہیں اسی طرح درمیان میں ترک تعلیم کرنے والے طلبہ کی تعداد میں دن بہ دن اضافہ ہورہا ہے اور یہ بھی واضح ہے کہ بعض طلبہ اس ذہنی تناو سے چھٹکارا پانے کے لیے خود کشیاں بھی کررہے ہیں ۔ ماہرین تعلیم کا کہنا ہے کہ اتنے واقعات پیش آنے کے باوجود کالج انتظامیہ کی جانب سے طلبہ پر ذہنی تناؤ کم نہ کرنا قابل تشویش بات ہے ۔ کالج مالکین و انتظامیہ کا صرف ایک ہی مقصدہوتا ہے کہ طلبہ زیادہ سے زیادہ پڑھ کر اچھے نمبرات حاصل کریں اور اس مقصد کے حصول میں طلبہ چاہے کسی بھی مشکل سے گزریں اس سے انہیں کوئی سروکار نہیں ہے ۔ اور اس مقصد کے حصول میں روزانہ کالجس میں 12 ۔ 14 گھنٹے پڑھائی کی جارہی ہے جس کی وجہ سے طلبہ کو آرام اور ذہنی سکون حاصل کرنے کے لیے بالکل مواقع نہیں ہیں اور کالجس کے انتظامیہ کا یہی تصور ہے کہ طلبہ اعلیٰ نمبرات سے کامیابی حاصل کرنے سے ان کی کالجس کا نام روشن ہوسکتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT