Friday , October 19 2018
Home / Top Stories / خشوگی معاملہ : ترکی اور سعودی عرب کی مشترکہ تحقیقات

خشوگی معاملہ : ترکی اور سعودی عرب کی مشترکہ تحقیقات

ہتھیاروں کی فروخت غیرمتاثر : صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ
ریاض ؍ انقرہ ۔ 12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ترک صدر کے دفتر نے لاپتہ سعودی شہری اور صحافی جمال خشوگی کے کیس کی تحقیقات کے لیے سعودی عرب اور ترکی کی ایک مشترکہ ٹیم تشکیل دینے کا اعلان کیا ہے۔ترکی کی سرکاری خبررساں ایجنسی اناطولو نے صدر رجب طیب اردغان کے ترجمان ابراہیم کالین کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ انقرہ نے اس معاملے کی تحقیقات کے لیے ایک مشترکہ ورکنگ گروپ تشکیل دینے کی غرض سے سعودی عرب کی تجویز قبول کر لی ہے۔ یہ مشترکہ ٹیم اب اس معاملے کی چھان بین کرے گی۔جمال خشوگی منگل 2 اکتوبر کو استنبول میں اچانک لاپتا ہوگئے تھے۔ان کی گمشدگی نے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں ایک بحرانی کیفیت پیدا کردی ہے۔گذشتہ جمعہ سے قبل مصر کی کالعدم مذہبی وسیاسی جماعت اخوان المسلمون اور قطر سے وابستہ میڈیا ذرائع نے اپنی رپورٹس میں یہ دعویٰ کیا تھا کہ سعودی حکام نے استنبول میں واقع اپنے قونصل خانے میں خشوگی کو حراست میں لے رکھا ہے۔لیکن سعودی ولیعہد اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان نے اس دعوے کو مسترد کردیا تھا۔انھوں نے گذشتہ جمعہ کو ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ’’ جمال خشوگی استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے میں نہیں تھے ۔واشنگٹن سے موصولہ اطلاع کے بموجب امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ترکی کے استنبول میں واقع سعودی عرب کے قونصل خانے میں صحافی جمال خشوگی کے قتل کی تحقیقات کا اعلان کیا ہے لیکن اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ تحقیقات کے نتائج سے سعودی عرب کو امریکی ہتھیارو کی فروخت متاثر نہیں ہوگی۔امریکہ کے دی گارجین اخبار میں شائع رپورٹ کے مطابق مسٹر ٹرمپ نے کہا کہ ہم بہت سخت ہیں۔ ہمارے پاس تحقیقاتی ٹیم ہے اور ہم ترکی کے ساتھ کام کررہے ہیں نیز واضح طور پر ہم سعودی عرب کے ساتھ کام کررہے ہیں۔ ہم اس واقعہ کی حقیقت جاننا چاہتے ہیں۔مسٹر ٹرمپ سے جب یہ پوچھا گیا کہ اگر سعودی حکومت مسٹر خشوگی کے قتل کی ذمہ دار پائی جاتی ہے تو کیا امریکہ ہتھیاروں کی فروخت میں کٹوتی کرے گا، اس کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مسٹر خشوگی کے قتل کی جانچ کے جو بھی نتائج سامنے آئیں ، سعودی عرب کو امریکی ہتھیاروں کی فروخت متاثر نہیں ہوگی۔

آئی ایم ایف کو پاکستان کی درخواست کا جائزہ لیا جائے گا : امریکہ
واشنگٹن ۔ 12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے آئی ایم ایف کو ’’قرض سے چھٹکارہ‘‘ کی جو درخواست دی ہے وہ اس کا ہر زاویہ سے جائزہ لے گا جس میں پاکستان کی قرض رقومات کا موقف بھی شامل ہے کیونکہ اس کیلئے چین کے اعظم ترین قرض کو ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT