Monday , November 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / خطرناک ویسٹ انڈیز کا آج سامنا کرنے انگلینڈ تیار

خطرناک ویسٹ انڈیز کا آج سامنا کرنے انگلینڈ تیار

ممبئی ۔15 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) دنیا کی مختلف لیگس میں شرکت کرنے کی وجہ سے ویسٹ انڈیز کی ٹیم کو کل یہاں آئی سی سی ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ کے سوپر 10 کے اپنے افتتاحی مقابلے میں انگلینڈ کیخلاف کسی قدر سبقت حاصل رہے گی ۔ ویسٹ انڈیز کی ٹیم جس نے 2012 ء میں خطاب حاصل کیا ہے ، وہ پھر ایک مرتبہ خطاب کی مضبوط دعویدار ٹیموں میں شامل ہے اور ٹیم میں ایک سے زائد آل راؤنڈرس کی موجودگی اسے طاقتور بنارہی ہے ۔ انگلینڈ جو دوسری جانب حالیہ عرصہ میں بہتر مظاہرے کرچکی ہے وہ 2010 ء میں خطاب بھی حاصل کرچکی ہے لہذا ایان مورگن کی قیادت میں انگلش ٹیم بہتر شروعات کیلئے پرعزم ہے ۔ ورلڈ کپ کے افتتاحی مقابلے سے قبل ویسٹ انڈیز اور انگلینڈ دونوں ہی نے اپنے ورام مقابلوں میں کامیابی حاصل کی ہے حالانکہ ویسٹ انڈیز کو ہندوستان کے خلاف شکست برداشت کرنی پڑی لیکن اس نے خطاب کی ایک اور دعویدار ٹیم آسٹریلیا کیخلاف ایک بہترین کامیابی حاصل کی ہے ۔ دوسری جانب انگلینڈ کیلئے وارم مقابلوں کے نتائج مزید بہتر ہیں جیسا کہ اس نے نیوزی لینڈ اور ممبئی کو شکست دی ہے ۔ ویسٹ انڈیز کی قیادت ڈیرن سمی کررہے ہیں جوکہ بولنگ کے علاوہ مڈل آرڈر میں تیز رفتار رنز بناتے ہوئے ٹیم کی کامیابی میں کلیدی رول ادا کرسکتے ہیں ۔ ان کے ہمراہ ڈیون براؤو اور اینڈری رسل ٹیم میں شامل دیگر دو میچ وننگ آل راؤنڈر ہیں ۔ ورلڈ کپ میں دونوں ٹیموں کے درمیان تاحال 6 مقابلے ہوئے ہیں اور دونوں ہی ٹیموں نے 3-3 فتوحات اپنے نام درج کئے ہیں ۔ دونوں ٹیموں کیلئے وانکھیڈے اسٹیڈیم میں اسپین بولنگ کا سامنا کرنا اہم چیلنج ہوگا کیونکہ یہاں کی وکٹ اسپین بولنگ کیلئے سازگار ہے ۔

انگلینڈ کے پاس لیگ اسپنر عادل رشید اور آف اسپنر معین علی کے علاوہ پہلی مرتبہ ٹیم میں شامل کئے گئے آل راؤنڈر لیام ڈاسن بھی موجود ہیں جوکہ بائیں ہاتھ سے اسپین بولنگ کرسکتے ہیں ۔ ویسٹ انڈیز کو اپنے اہم ترین اسپنر سنیل نارائن کی کمی محسوس ہوگی جو دنیا کے کسی بھی بہترین بیٹسمین کو پریشان کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔ نارائن کی عدم موجودگی میں اسپن کی ذمہ داری مارلون سیموئیلس ، کرس گیل ، سلمان بن اور سامیول بدری پر عائد ہورہی ہے ۔ ویسٹ انڈیز کرکٹ ٹیم کا انتظامیہ دھماکو اوپنر کرس گیل سے ایک بہتر شروعات کی اُمید کررہا ہے ۔ ویسٹ انڈیز کو مڈل آرڈر میں کیرن پولارڈ کی بیٹنگ اور اننگز کے درمیانی اوورس میں اہم اوورس کی خدمات دستیاب نہیں ہے جبکہ اوپنر لینڈل سیمنس بھی ٹیم کو دستیاب نہیں ہے ۔ انگلینڈ کی ٹیم کو بھی اپنے کپتان سے اُمیدیں وابستہ ہیں کیونکہ ایان مورگن جس رفتار سے بیٹنگ کرسکتے ہیں وہ کسی بھی وقت مقابلہ کا نقشہ بدل سکتی ہے ۔ مورگن نے ویسٹ انڈیز کے خلاف کامیابی کیلئے اُمید ظاہر کرنے کے علاوہ اعتراف بھی کیا ہے کہ ویسٹ انڈیز آسان حریف نہیں ہے لیکن یہاں ممبئی میں دو وارم اپ مقابلوں میں شرکت اور کامیابی نے اس کے حوصلے بلند کرنے کے علاوہ یہاں کے حالات اور وکٹ کے برتاؤ سے واقفیت کا موقع فراہم کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT