Wednesday , July 18 2018
Home / ہندوستان / خط قبضہ ، بین الاقوامی سرحد (جموں) پر پاکستان کی شلباری

خط قبضہ ، بین الاقوامی سرحد (جموں) پر پاکستان کی شلباری

جموں 22 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوجیوں نے فائرنگ شروع کردی اور ہندوستانی مورچوں پر بین الاقوامی سرحد اور خطہ قبضہ پر 3 سیکٹرس میں جو جموں اور راجوری اضلاع کے ہیں، رات بھر فائرنگ کرتے رہے۔ بی ایس ایف کے عہدیدار نے آج کہاکہ کل ایک شہری اور دو افراد پاکستان کی بین الاقوامی سرحد پر سیکٹر کانا چاک جموں ضلع کی پٹی میں زخمی ہوگئے تھے اور جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں گزشتہ جمعرات سے اب تک 12 ہوگئی تھی جبکہ زخمیوں کی تعداد 60 سے زیادہ ہوگئی۔ خطہ قبضہ اور بین الاقوامی سرحد پر جموں علاقے میں تعلیمی ادارے مسلسل بند ہیں۔ رات بھر میں پرگوال، مٹھ، آر ایس پورہ، ارنیا اور رام گڑھ سیکٹرس (جموں اور سانبا اضلاع) رات بھر فائرنگ جاری رہی۔ یہ آج 5.45 بجے دن رُک گئی۔ پاکستانی رینجرس نے بین الاقوامی سرحد پر کانا چاک سیکٹر میں کل رات شلباری شروع کردی تھی۔ پاکستانی فوجیوں نے خطہ قبضہ پر بھوانی، کرالی، نمبھ اور شیرمکری علاقوں میں جو ضلع راجوری کے علاقے ہیں، کل شام زبردست شلباری کی تھی۔ 7 شہری، تین فوجی اور دو بی ایس ایف کے ارکان عملہ جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں تاحال ہلاک ہوچکے ہیں۔ ایک بی ایس ایف فوجی اور کمسن لڑکی جمعرات کے دن ہلاک ہوئے تھے۔ چار افراد بشمول دو شہری اور ایک بی ایس ایف فوجی، ایک فوج کا سپاہی بھی ہلاک کئے گئے اور 40 سے زیادہ دیگر افراد جمعہ کے دن پاکستانی فائرنگ میں زخمی ہوئے۔

TOPPOPULARRECENT