Saturday , December 16 2017
Home / دنیا / خط قبضہ پر خلاف ورزیاں ،ہند ۔ پاک مذاکرات کا موضوع

خط قبضہ پر خلاف ورزیاں ،ہند ۔ پاک مذاکرات کا موضوع

صدر سلامتی کونسل کے نام پاکستانی مکتوب پر ہندوستانی سفیر برائے اقوام متحدہ کا ردعمل
اقوام متحدہ۔ 9 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کے اعلیٰ سطحی سفارت کار برائے اقوام متحدہ نے کہا کہ پاکستان کو خط قبضہ پر جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر ہندوستان کے ساتھ ضرور بات چیت کرنی چاہئے۔ قبل ازیں پاکستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو جموں و کشمیر میں جنگ بندیوں کی خلاف ورزیوں کے بارے میں مکتوب روانہ کیا تھا۔ ہندوستان کے سفیر برائے اقوام متحدہ اسوک مکرجی نے کہا کہ اگر انہوں نے سلامتی کونسل کو اس موضوع پر مکتوب روانہ کیا ہے، جو بہت زیادہ باہمی معاملہ ہے اور شملہ معاہدہ کے تحت اس کا احاطہ کیا گیا ہے۔ جس پر دونوں ممالک نے دستخط کئے ہیں، مجھے حیرت ہے کہ انہوں نے ایسا کیوں کیا ہے۔ ان سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو کشمیر میں خط قبضہ کے پاس جنگ بندیوں کی خلاف ورزیوں کے بارے میں سوال کیا گیا تھا۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ یہ مکتوب اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو روانہ کیا گیا ہے اور ہندوستان اس اعلیٰ سطحی شعبہ کا رکن نہیں ہے۔ اگر انہیں کچھ اندیشے تھے، تو انہیں ہم سے باہمی بات چیت کے دوران اس کو موضوع بنانا چاہئے تھا۔ کشمیر پہلے ہی ایک باہمی مسئلہ قرار دیا جاچکا ہے۔ پاکستان نے جنگ بندیوں کی خلاف ورزیوں کا مسئلہ گزشتہ جمعہ کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے نام اپنے مکتوب میں اٹھایا تھا۔ صدر کونسل کے نام اپنے مکتوب میں جو جاریہ ماہ کیلئے روسی سفیر ویٹالی چرکن ہیں، پاکستان کے مستقل نمائندہ برائے اقوام متحدہ ملیحہ لودھی نے کونسل سے گذارش کی کہ وہ ہندوستان کی اشتعال انگیز کاررائیوں کا نوٹ لیں جو کشمیر میں خط قبضہ اور کارگذار سرحد پر کی جارہی ہیں۔ اس مکتوب میں صدر سلامتی کونسل سے گزارش کی گئی ہے کہ ہندوستان کو صبر و تحمل کا مظاہرہ کرنے کی تلقین کریں اور 2003ء کے جنگ بندی معاہدہ کی تعمیل کرنے کی ہدایت دیں۔ پاکستان یہ مسئلہ اقوام متحدہ میں سیاسی اُمور اور بحالی امن کارروائیوں کے شعبوں کے اعلیٰ سطحی عہدیداروں کے ساتھ اٹھاتا رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT