Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / خلوت میدان پارکنگ کیلئے استعمال ، ڈپٹی مئیر کا وعدہ وفا نہ ہوسکا

خلوت میدان پارکنگ کیلئے استعمال ، ڈپٹی مئیر کا وعدہ وفا نہ ہوسکا

نوجوانوں اور مقامی شہریوں میں ناراضگی ، میدان بچاؤ مہم شروع کرنے پر غور
حیدرآباد۔28اگسٹ(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد کے کھیل کے میدانوں کی اہمیت کو ختم کرنے کا سلسلہ جاری ہے اور کھیل کود کی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے بجائے کھیل کے میدانو ںکو پارکنگ کے علاقو ںمیں تبدیل کیا جا رہا ہے متعد مرتبہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کو متوجہ کروانے کے باوجود بھی اس مسئلہ کی عدم یکسوئی کے سبب شہریو ںمیں ناراضگی پائی جاتی ہے۔ پرانے شہر کے علاقوں میں موجود کھیل کے میدانوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے بجائے بلدیہ کی جانب سے پرانے شہر کے میدانو ںکو نظر انداز کرنے کا رویہ اختیار کیا گیا ہے ۔ خلوت میدان میں غیر مجاز پارکنگ کے سلسلہ کو ترک کروانے کے سلسلہ میں مقامی کارپوریٹر ڈپٹی مئیر کے علاوہ دیگر بلدی عہدیداروں کے اعلان و تیقنات کے باوجود بھی خلوت میدان میں غیر مجاز پارکنگ کا سلسلہ جاری ہے اور اسی طرح پرانے شہر کے کئی علاقو ںمیں موجود پارک اور میدانوں میں جاری سرگرمیاں شہریوں کے لئے تکلیف کاسبب بنی ہوئی ہیں ۔ خلوت میدان کے اطراف کے علاقوں کے مکینوں نے میدان میں گاڑیوں کی پارکنگ کے خلاف خلوت میدان بچاؤ مہم شروع کرنے کا انتباہ دیا تھا وار انتباہ کے بعد ڈپٹی مئیر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد جناب بابا فصیح الدین نے دورہ کرتے ہوئے اس بات کا تیقن دیا تھا کہ خلوت میدان میں ٹریفک پولیس کی جانب سے کی جانے والی پارکنگ کو برخواست کروایا جائے گا لیکن ان کے اس تیقن کے باوجود اب بھی پارکنگ کا مسئلہ جوں کا توں برقرار ہے اور صبح میدان میں چہل قدمی کیلئے پہنچنے والوں کو تکالیف کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ محکمہ ٹریفک پولیس کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ اطراف کے علاقوں میں پارکنگ کیلئے وسیع اراضی نہ ہونے کے سبب میدان کا استعمال کیا جارہاہے اسی دوران مقامی عوام بالخصوص نوجوانو ں کا کہناہے کہ میدان کے کھلے حصہ میں گاڑیوں کی پارکنگ کئے جانے کے سبب کھیل کود میں دشواریو ںکا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور بسا اوقات زائد گاڑیاں ہونے کے سبب وہ کھیلنے سے قاصر رہنے لگے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT