Saturday , December 15 2018

خواتین ’’اچھی منتظم ‘‘ اسپیکر لوک سبھا سمترا مہاجن کا بیان

خاتون کارکنوں کی چوٹی کانفرنس سے خطاب‘ مردوں سے دوگنا کام کرنے کا ادعا
چندی گڑھ ۔12اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) اسپیکر لوک سبھاسمترا مہاجن نے آج خواتین کو ’’اچھی منتظم ‘‘ قرار دیا اور کہا کہ حالانکہ انتظامیہ ایک ذہنی دباؤ کا کام ہے اور اندرون اور بیرون ملک انتظام کیلئے کافی الجھنوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ اسپیکر نے مزید زور دے کر کہاکہ ملک کی ترقی کیلئے یہ بات اہم ہے کہ خواتین کو اختیارات دیئے جائیں اور انہیں اپنی طاقت کا احساس ہوجائے ۔ انہوں نے کہاکہ چندی گڑھ کی رکن پارلیمنٹ کرن دوم نے بالکل درست کہا کہ جب کوئی خاتون اپنے گھر سے کام کرنے کیلئے باہر آتی ہے تو اسے دوگنا کام کرنا پڑتا ہے ۔ حالانکہ مرد کہتے ہیں کہ وہ بھی اسی طرح کا کام کررہے ہیں لیکن میں نہیں سمجھتی کہ اس پر کوئی مرد فخر کرسکتا ہے ۔ کیونکہ وہ گھر میں کام نہیں کرتا ۔ سمترا مہاجن نے خاتون کارکنوں کی چوٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جس کا اہتمام بھارت وکاس کی صدر نے آج کیا تھا کہا کہ میں کہتی ہوں کہ خواتین اچھی منتظم ہیں ۔ کوئی امتحان لئے بغیر وہ اچھی منتظم ثابت ہوتی ہیں لیکن انہیں احساس نہیں ہوتا ہے کہ وہ اچھی منظم ہیں ۔ کیونکہ ہم خود کہتی ہیں کہ ’’ ہم کچھ نہیں کررہی ہیں‘‘ خاتون خانہ ہونے کا مطلب یہ ہے کہ میں کچھ نہیں ہوں ۔ سب سے پہلے ہمیں اپنے ذہن سے یہ خیال نکال پھینکنا ہوگا کیونکہ خواتین بہت کچھ کرتی ہیں ۔ انہوں نے خواتین کی تعریف کی کہ وہ شادی کے بعد پورے خاندان کا انتظام کرتی ہیں ۔ ایک نئے خاندان میں اپنا پرانا خاندان چھوڑ کر شامل ہوجاتی ہیں اور نہ صرف ان کے ساتھ گھل مل جاتی ہیں بلکہ خود کو اس خاندان کا ایک رکن تصورکرتی ہیں ۔ وہ ان کا تمدن اپناتی ہے جس طریقہ سے وہ نئے خاندان میں گھل مل جاتی ہیں ایسا معلوم ہوتا ہے کہ وہ کئی سال سے یہی کرتی آرہی ہیں ۔ انہوں نے رکن پارلیمنٹ کی مثال دی جس نے ایک بار کہا تھا کہ انہوں نے اپنی تعلیم کی تکمیل کی اور اس میں انہیں ان کی بیوی کی مدد حاصل رہی ۔ انہوں نے کہا کہ اس کا مطلب یہ نہیں کہ مرد اس بات کو محسوس نہیں کرتے کہ خواتین کی دین کیا ہے لیکن اس کیلئے حساسیت بھی ضروری ہے ۔

TOPPOPULARRECENT