Thursday , September 20 2018
Home / ہندوستان / خواتین بِل کی منظوری یقینی بنانے حکومت لوک سبھا اجلاس میں توسیع کیلئے تیار

خواتین بِل کی منظوری یقینی بنانے حکومت لوک سبھا اجلاس میں توسیع کیلئے تیار

نئی دہلی 19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) دیرینہ مدت سے زیرالتواء خواتین تحفظات بِل منظور کروانے کے مطالبات کے دوران حکومت نے آج کہاکہ وہ پندرھویں لوک سبھا کے آخری اجلاس میں توسیع کرنے کیلئے بھی تیار ہے اگر ایوان اِس سے اتفاق کرے۔ مقررہ پروگرام کے بموجب جمعہ کے دن لوک سبھا کے اجلاس کا آخری دن ہوگا۔ یہ مسئلہ جیہ پردا نے ایوان میں اکثر اُٹ

نئی دہلی 19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) دیرینہ مدت سے زیرالتواء خواتین تحفظات بِل منظور کروانے کے مطالبات کے دوران حکومت نے آج کہاکہ وہ پندرھویں لوک سبھا کے آخری اجلاس میں توسیع کرنے کیلئے بھی تیار ہے اگر ایوان اِس سے اتفاق کرے۔ مقررہ پروگرام کے بموجب جمعہ کے دن لوک سبھا کے اجلاس کا آخری دن ہوگا۔ یہ مسئلہ جیہ پردا نے ایوان میں اکثر اُٹھایا ہے جس کی بائیں بازو کی پارٹیوں، بی جے ڈی، ترنمول کانگریس یہاں تک کہ کانگریس کے چند ارکان کی جانب سے پرزور تائید کی گئی تھی۔ اِن میں سے کئی ارکان جیہ پردا کے مطالبہ سے اظہار یگانگت کرتے ہوئے نشستوں سے اُٹھ کھڑے ہوگئے تھے۔

سماج وادی پارٹی کا نام لئے بغیر جس نے جیہ پردا کو پارٹی سے خارج کردیا ہے، اداکارہ سے سیاستداں بننے والی خاتون نے کہاکہ بعض پارٹیاں اِس بِل کی منظوری نہیں چاہتیں لیکن حکومت کوشش تو کرسکتی ہے۔ سی پی آئی (ایم) قائد باسودیب آچاریہ نے بھی کہاکہ یہ بِل برسوں سے زیرالتواء ہے۔ حکومت اِسے پیش کیوں نہیں کرتی۔ اپنے جواب میں مرکزی وزیر پارلیمانی اُمور کمل ناتھ نے کہاکہ وہ ارکان کے ساتھ پوری طرح متفق ہیں اور خواتین تحفظات بِل کی منظوری کے لئے اگر ایوان اتفاق کرے تو اجلاس میں توسیع کرنے کے لئے تیار ہیں۔

انیل امبانی کی لیفٹننٹ گورنر
دہلی سے ملاقات
نئی دہلی 19 فروری (سیاست ڈاٹ کام) اے ڈی اے جی کے صدرنشین انیل امبانی نے آج لیفٹننٹ گورنر نجیب جنگ سے ملاقات کی اور سمجھا جاتا ہے کہ دو برقی توانائی کی ترسیلی کمپنیوں پر سی اے جی کی آڈٹ رپورٹ کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔ یہ دونوں کمپنیاں ریلائنس انفرا سے تعلق رکھتی ہیں۔ سابق عام آدمی پارٹی حکومت نے اِس بات کی اور برقی سربراہی سے متعلق دیگر مسائل کی تحقیقات کی ہدایت دی ہے۔ ذرائع کے بموجب عام آدمی پارٹی حکومت کی دہلی الیکٹرسٹی ریگولیٹری کمیشن کو سفارش سے ایک تنازعہ اُٹھ کھڑا ہوا تھا۔ اِس پر بھی گورنر اور انیل امبانی کی ملاقات کے دوران تبادلہ خیال کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT