Thursday , June 21 2018
Home / ہندوستان / خواتین تحفظات قانون کی منظوری کیلئے احتجاجی جلوس

خواتین تحفظات قانون کی منظوری کیلئے احتجاجی جلوس

نئی دہلی۔13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ کے سرمایہ اجلاس صرف 2 دن بعد شروع ہوجائے گا۔ کئی خواتین آج خواتین تحفظات بل کی منظوری کے لیے جلوس نکالنے کا اہتمام کررہی ہیں۔ یہ تنظیمیں قومی دارالحکومت میں یکجہتی جلوس نکالیں گیں اور حکومت کو یاد دہانی کریں گیں کہ اپنے تیقن کی تکمیل کریں جسے وسیع پیمانے پر گشت کروایا گیا ہے۔ اس قانون کو پارلیمنٹ میں جلد از جلد منظور کروائے۔ خاتون کارکنوں کا کہنا ہے کہ این ڈی اے زیر قیادت حکومت کی اکثریت لوک سبھا میں موجود ہے تاکہ پارٹی کے منشور میں جو وعدہ کیا گیا تھا اس کے مطابق طویل عرصہ زیر التوا قانون منظور کروایا جاسکے۔ ہندوستان کی خواتین دہشت زدہ اور یہ دیکھ کر مایوس ہیں کہ حکومت اس قانون کو نظرانداز کررہی ہے۔ حالانکہ 3 سال 6 سے برسر اقتدار ہے۔ موجودہ حکومت کو عاجلانہ بنیادوں پر عمل کرنا چاہئے تاکہ عوام کا اعتماد حاصل کرسکے۔ ڈائرکٹر مرکز برائے سماجی تحقیق رنجنا کماری نے کہا کہ قومی اتحاد برائے خواتین تحفظات قانون کے پرچم تلے 50 سے زیادہ تنظیموں کے کارکن اس جلوس میں موجود تھے۔ مرکز برائے سماجی تحقیق خواتین کے مشترکہ پروگرام انصاف کی طلب خواتین کی بااختیاری اور تعاون، وائی ایم سی اے اور دیگر کئی نے بھی اس مظاہرے میں حصہ لیا۔ اگر قانون منظور ہوجائے اور صنفی بجٹ میں اضافہ کیا جائے تو ملک ترقی کرسکتا ہے۔ ایک خاتون کارکن انجلی مہتا نے اس کا ادعا کیا۔

TOPPOPULARRECENT