Tuesday , January 23 2018
Home / شہر کی خبریں / خواتین کو خود روزگار سے وابستہ ہونے کیلئے فنی تربیت حاصل کرنے کا مشورہ

خواتین کو خود روزگار سے وابستہ ہونے کیلئے فنی تربیت حاصل کرنے کا مشورہ

انجمن ترقی اردو عظیم تر حیدرآباد کی تقسیم سلائی مشین تقریب ، جناب ظہیر الدین علی خاں و دیگر کا خطاب

انجمن ترقی اردو عظیم تر حیدرآباد کی تقسیم سلائی مشین تقریب ، جناب ظہیر الدین علی خاں و دیگر کا خطاب

حیدرآباد ۔ 23 ۔ مئی : ( راست ) : انجمن ترقی اردو عظیم تر حیدرآباد کی خود روزگار اسکیم برائے خواتین کے کورس کی تکمیل پر آج اردو گھر مغل پورہ جلسہ تقسیم سلائی مشین منعقد ہوا ۔ جس میں جناب ظہیر الدین علی خاں مینجنگ ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے بحیثیت مہمان خصوصی شرکت کر کے تربیت یافتہ دس مستحق خواتین میں سلائی مشین تقسیم کئے ۔ اس موقع پر انہوں نے مخاطب کرتے ہوئے انجمن ترقی اردو کی فلاحی اسکیم کو شروع کرنے پر مبارکباد دی اور مستقبل میں اس طرح کے کام کو جاری رکھنے کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا جب کہ انہوں نے تربیت پانے والی خواتین سے خواہش کی کہ وہ اپنے فن سے بھر پور استفادہ کریں تاکہ خود روزگار حاصل ہوسکے ۔ آمدنی سے خاندان میں خوشحالی پیدا کی جاسکتی ہے ۔ جناب ظہیر الدین علی خاں نے اپنے سلسلہ خطاب کو جاری رکھتے ہوئے خواتین پر زور دیا کہ وہ فنون لطیفہ سے استفادہ کریں تاکہ خود روزگار سے وابستہ ہوسکیں ۔ اس تقریب میں جناب سید فضل الحق رضوی انچارج تعلیمی امور ، ڈاکٹر راہی ، ڈاکٹر آمنہ تحسین ، پروفیسر فاطمہ پروین ، جناب غلام یزدانی ایڈوکیٹ و ریاستی صدر انجمن ، مسعود فضلی صدر انجمن شہری ، جناب محمد عبدالرحیم خاں معتمد عمومی ریاستی انجمن ترقی کے علاوہ خواتین اور سرپرستوں کی کثیر تعداد موجود تھی ۔ قبل ازیں ڈاکٹر راہی جنرل سکریٹری انجمن ترقی اردو عظیم تر حیدرآباد نے اپنے خطبہ استقبالیہ میں بتایا کہ انجمن ہذا کی جانب سے خواتین کو خود روزگار سے جوڑنے کے لیے خود روزگار اسکیم برائے خواتین کے تحت چھ ماہی کورسیس ٹیلرنگ ٹریننگ سرٹیفیکٹ کورس کے مثبت نتائج برآمد ہورہے ہیں ۔ انہوں نے مستقبل میں بھی ان کی شروع کردہ اسکیم کو فروغ حاصل ہونے کی توقع ظاہر کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ستمبر 2013 میں فاروق نگر عقب فلک نما میں پہلا سنٹر قائم کیا گیا تھا جس میں غریب اور مستحق خواتین کو تربیت فراہم کی گئی جس کا مقصد انہیں روزگار سے جوڑ کر خود مکتفی بنانا ہے ۔

جس کے بعد فاروق نگر ، کاماٹی پورہ ، جہانگیر آباد میں بھی اس طرح کے سنٹرس قائم کئے گئے ہیں تاکہ زیادہ سے زیادہ خواتین کو تربیت کے بعد روزگار حاصل ہوسکے ۔ جناب مسعود فضلی نے انجمن کی سرگرمیوں سے واقف کروایا ۔ انہوں نے جناب ظہیر الدین علی خاں مینجنگ ایڈیٹر سیاست کی جانب سے غریب 50 سے زائد لڑکیوں اور طالبات کو حصول اعلیٰ تعلیم کے لیے امبیڈکر اوپن یونیورسٹی کے بی اے ، بی کام اور بی ایس سی میں داخلہ کے لیے فیس کی ادائیگی پر دل کی گہرائیوں سے خیر کے اقدام کی ستائش کی اور امید ظاہر کی کہ داخلہ پانے والی طالبات یقینا آگے بڑھ کر اعلیٰ تعلیم سے فارغ ہونے کے علاوہ روزگار سے جڑیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک لڑکی کا تعلیم یافتہ ہونا گویا ایک خاندان کے تعلیم یافتہ ہونے کے مماثل ہے اس طرح پچاس سے زائد طالبات کی تعلیم کئی خاندانوں میں نہ صرف خوشحالی آئے گی بلکہ ان کے خاندانیں تعلیم یافتہ بھی ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اسکیم اور سنٹرس کی کامیابی پر ریاستی انجمن ترقی اردو کے روح رواں جناب غلام یزدانی کے علاوہ معتمد عمومی جناب محمد عبدالرحیم خاں کا بھی دل کی گہرائیوں سے رہبری اور رہنمائی پر شکریہ ادا کیا کیوں کہ انہوں نے ہر قدم پر مفید رائے و مشورے دیتے ہوئے اسکیم کی کامیابی میں اہم کردار نبھا رہے ہیں ۔ آخر میں انہوں نے سنٹرس اور اسکیم کے لیے ساتھ دینے والوں کے علاوہ تقریب میں شریک مہمانان خصوصی اور شرکاء کا فردا فردا شکریہ ادا کیا ۔ اس تقریب میں دیگر معزز شخصیتوں نے بھی خطاب کیا۔۔

TOPPOPULARRECENT