Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / خواتین کی جبری بال تراشی کیخلاف مظاہرے جاری ، سرینگر میں پرتشدد جھڑپیں

خواتین کی جبری بال تراشی کیخلاف مظاہرے جاری ، سرینگر میں پرتشدد جھڑپیں

سرینگر ، 16 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) وادی کشمیر میں نامعلوم افراد کے ہاتھوں خواتین کی جبری بال تراشی کا سلسلہ بدستور جاری ہے ۔ بال تراشی کے تازہ واقعات کے خلاف جہاں پیر کے روز وادی کے متعدد علاقوں میں احتجاجی ہڑتال اور مظاہرے کئے گئے اور سری نگر کے مائسمہ میں احتجاجیوں کی سیکورٹی فورسز کے ساتھ شدید جھڑپیں ہوئیں، وہیں سری نگر کے حول علاقہ میں واقع اسلامیہ کالج میں سیکورٹی فورسز نے ملزمان کی گرفتاری میں تاخیرکے خلاف احتجاج کررہے طالب علموں کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق سری نگر کے مائسمہ کے علاوہ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے شیری میں ایک لڑکی کے بال کاٹنے کا تازہ واقعہ پیش آیا ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ مذکورہ لڑکی کے بال تین روز قبل بھی کاٹے گئے تھے ۔ اس دوران ریاستی پولیس کے کشمیر چیف منیر احمد خان نے ایک نیوز کانفرنس کے دوران ان اطلاعات کی نفی کی کہ متاثرہ خواتین کا پولی گراف ٹسٹ (جھوٹ پکڑنے والا ٹسٹ) کرایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ملوثین کا پتہ لگانے کے لئے متاثرہ خواتین کا سائنٹفک معائنہ کیا جائے گا۔ سری نگر کا مائسمہ علاقہ جو کہ جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) چیئرمین محمد یاسین ملک کا گڑھ مانا جاتا ہے ، میں پیر کے روز سہ پہر کے وقت ایک لڑکی کے بال کاٹنے کی خبر پھیلتے ہی درجنوں لوگوں بشمول خواتین اور نوجوانوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاج شروع کیا۔ جب احتجاجی نوجوانوں نے نعرے لگاتے ہوئے بڈشاہ چوک کے راستے تاریخی لال چوک کی طرف بڑھنے کی کوشش کی تو علاقہ میں پہلے سے موجود سیکورٹی فورس اہلکاروں نے انہیں منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کے گولے داغے ۔ اس کے نتیجے میں احتجاجی نوجوان مشتعل ہوئے اور سیکورٹی فورسز پر پتھراؤ کرنے لگے ۔ علاقہ میں احتجاجیوں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپوں کا سلسلہ قریب دو گھنٹوں تک جاری رہا۔ علاقہ میں جھڑپیں شروع ہونے کے ساتھ ہی دکانیں اور تجارتی مراکز بند ہوئے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آواجاہی معطل ہوکر رہ گئی۔ اس دوران سری نگر کے حول علاقہ میں واقع اسلامیہ کالج کے باہر پیر کو احتجاجی طالب علموں اور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں ہوئیں۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق اسلامیہ کالج کے طالب علموں نے بال تراشی کے نہ تھمنے والے سلسلے اور پولیس کی ملوثین کو گرفتاری یقینی بنانے میں ناکامی کے خلاف شدید احتجاج شروع کردیا۔

TOPPOPULARRECENT