Saturday , September 22 2018
Home / ہندوستان / خواتین کے تحفظ کے قوانین بے اثر

خواتین کے تحفظ کے قوانین بے اثر

وزیراعظم لب کشائی کریں :این سی پی رکن پارلیمنٹ سپریہ سولے
ممبئی۔ 15 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ہریانہ میں اجتماعی عصمت ریزی واقعہ کے پیش نظر این سی پی کی رکن پارلیمنٹ سپریہ سولے نے وزیراعظم نریندر مودی سے سوال کیا کہ آیا ملک میں خواتین پر مظالم کو روکنے کیلئے بنائے گئے قوانین پر عمل بھی ہورہا ہے؟۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ پر وزیراعظم کو اپنی خاموشی توڑنی چاہئے۔ واضح رہے کہ ہریانہ کے مہیندر ضلع میں ایک 19 سالہ طالبہ کی 3 افراد نے اجتماعی عصمت ریزی کی تھی۔ سپریہ سولے نے اپنے بیان میں کہا کہ ایک خاتون کی حیثیت سے وہ وزیراعظم سے مطالبہ کرتی ہیں کہ ایسے معاملات میں انصاف کیا جائے۔ وزیراعظم ملک میں ’’بیٹی بچاؤ، بیٹی پڑھاؤ‘‘ کا نعرہ دیتے ہیں۔ ایسے کوئی عوامل نہیں ہیں جن سے محسوس ہوسکے کہ قوانین پر عمل بھی کیا جارہا ہے حالانکہ ملک میں قوانین موجود ہیں۔ انہوں نے سرکاری اعداد و شمار کے حوالے سے بتایا کہ صرف مہاراشٹرا میں 3,000 لڑکیاں لاپتہ ہیں اور یہاں برسراقتدار جماعت کے رکن اسمبلی ، خواتین کو اغوا کرنے کا کھلے عام اعلان کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT