Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / خواتین کے چہروں پر اسپرے چھڑک کر چین چھیننے کا نیا طریقہ

خواتین کے چہروں پر اسپرے چھڑک کر چین چھیننے کا نیا طریقہ

اسناچرس کی نئی حکمت عملی سے پولیس کو پریشانیاں ‘ کوئی سراغ دستیاب نہیں ہوسکا
حیدرآباد ۔ /24 اکٹوبر (سیاست نیوز) چین اسناچرس نے ایک اور نیا طریقہ اپنایا ہے اسناچرس پہلے اکیلی راہ رو خواتین کو نشانہ بنایا کرتے تھے بعد ازاں ٹریفک کا خیال کئے بغیر دو پہیہ گاڑیوں پر سوار خواتین کے گلوں سے چین اسناچنگ کیا کرتے تھے اور اب خواتین کے چہروں پر اسپرے چھڑک کر چین اسناچنگ کررہے ہیں ۔ ایرانی گینگ کا خاتمہ کرنے کی پولیس کوشش میں تھی کہ پھر ایک نئے طریقہ سے چین اسناچنگ پولیس کیلئے درد سر بنی ہوئی ہے ۔ تاحال پولیس کو اسپرے چین اسناچنگ گینگ سے متعلق کوئی سراغ دستیاب نہیں ہوا ہے ۔ ایک ہفتہ میں دو اسپرے چین اسناچنگ واقعات رونما ہوئے ہیں ۔ ایک واقعہ میں اسناچرس نے باڈی اسپرے چھڑکا ہے جبکہ دوسرے واقعہ میں کونسا اسپرے چھڑکا گیا ہے پولیس تحقیقات سے واضح ہونا ہے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اچانک اسپرے یا پانی آنکھوں میں چھڑکنے سے تیز جلن ہوتی ہے ۔ پولیس کا گمان ہے کہ اسناچرس باڈی اسپرے کے علاوہ پپر اسپرے کا استعمال کررہے ہیں ۔ ڈاکٹرس کے مطابق باڈی اسپرے آنکھوں میں لگنے سے آنکھوں کو کوئی نقصان نہیں ہوگا ۔ ماضی کے ریکارڈ سے ہٹکر اب دن دھاڑے اسناچنگ کررہے ہیں ۔ الکاپوری کی رہنے والی پدماوتی نامی خاتون /20 اکٹوبر کو رشتہ داروں کے پاس گئی تھی اور صبح 9.30 بجے پیدل واپس ہورہی تھی کہ الکاپور روڈ نمبر 5 پر سائی بابا مندر کے قریب گینگ نے 4 تولے سونے کی چین چھین کر فرار ہوگئی ۔ واقعہ کے 10 منٹ بعد آر کے پورم میں ضعیف خاتون کے گلے سے چین اسناچنگ کی گئی ۔ اور اس دن رات 9.30 بجے ملک پیٹ میں رجنی نامی خاتون کے گلے سے چین چھیننے کا واقعہ پیش آیا ۔ پولیس کا خیال ہے کہ یہ تینوں واقعات تقریباً ایک طرح کے ہیں لہذا ان تینوں واقعات کو انجام دینے والی ایک ہی گینگ ہے اور یہ گینگ اوڈیشہ سے شہر آکر اسناچنگ کے بعد واپس جارہی ہے ۔ اس دن کاچیگوڑہ ریلوے اسٹیشن میں ایک اور خاتون کے گلہ سے چین چھینی گئی اور یہ واقعہ ٹرین میں پیش آنے سے پولیس دوسری گینگ کا واقعہ سمجھ رہی ہے ۔ مختلف جرائم کے تحت سزا کاٹنے والے قیدیوں کی ملاقات جیل میں ہوتی ہے جہاں وہ ایک دوسرے کے چوری کے واقعات سے آگاہی حاصل کرتے ہیں اور باہر آنے کے بعد دوبارہ پروگرام ترتیب دیتے ہیں اور اس معاملہ میں سینئر چوروں کو جونیر چور استاد سمجھتے ہوئے ان کے تجربات پر عمل کرتے ہیں ۔ حالیہ دنوں گرفتار ماہر چین اسناچر بالامروگن چوری کے نشانات بالکل نہیں چھوڑتا تھا ۔ آخر کار موبائیل فون کے ذریعہ پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ جیل سے باہر آنے کے بعد بالا مروگن چوری کے وقت فون کا استعمال بند کردیا اور اس مرتبہ سی سی کیمروں نے اسے گرفتار کروادیا ۔ پولیس نے اسناچرس کی گرفتاری کیلئے خصوصی ٹیموں کو میدان میں اتارا تھا ۔ 50 پولیس والوں پر مشتمل 4 ٹیم کے ارکان عوامی ہجوم والے علاقوں میں سیول ڈریس میں رہتے ہوئے نگرانی کررہے تھے اور دوبارہ اس طرح کی خصوصی ٹیموں کو متحرک کردیا گیا ہے مگر پولیس عملہ کی کمی کی وجہ سے یہ ٹیمیں ہمیشہ خدمات انجام دینے سے قاصر ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT