Saturday , September 22 2018
Home / مذہبی صفحہ / خواجہ غریب نواز کے چند ارشادات

خواجہ غریب نواز کے چند ارشادات

حضرت غریب نواز نے فرمایا: ’’دُکھ کے ماروں کی فریاد رسی، حاجت مند انسانوں کی حاجت روائی اور بھوکوں کو کھانا کھلانا اپنا شعار بنا لینا چاہئے ٭ آپ نے اللہ تعالیٰ کا نیک اور سچا بندہ بننے کے لئے تین اصولوں کی تعلیم دی ہے، اول دریا کی طرح سخاوت، دوم آفتاب کی طرح شفقت اور زمین کی طرح تواضع ٭ محبت الہٰی کی وضاحت کرتے ہوئے فرمایا: ’’محبت

حضرت غریب نواز نے فرمایا: ’’دُکھ کے ماروں کی فریاد رسی، حاجت مند انسانوں کی حاجت روائی اور بھوکوں کو کھانا کھلانا اپنا شعار بنا لینا چاہئے ٭ آپ نے اللہ تعالیٰ کا نیک اور سچا بندہ بننے کے لئے تین اصولوں کی تعلیم دی ہے، اول دریا کی طرح سخاوت، دوم آفتاب کی طرح شفقت اور زمین کی طرح تواضع ٭ محبت الہٰی کی وضاحت کرتے ہوئے فرمایا: ’’محبت الہٰی کی علامت یہ ہے کہ خدا کا مطیع رہے اور کسی غیر خدا سے ڈرکر اس کے حکم پر نہ چلے‘‘ ٭ بدبختی کی علامت واضح کرتے ہوئے فرماتے ہیں: ’’حقیقی متوکل وہ شخص ہے، جو اپنی تکلیف خلقت سے ہٹالے‘‘ ٭ راہِ حق میں قرار پکڑنے یعنی قائم رہنے کے متعلق ارشاد فرمایا: ’’راہِ حق میں قرار پکڑنا دو چیزوں پر منحصر ہے، اول عبودیت (بندگی) اور دوسرے تعظیمِ حق تعالیٰ، یعنی اللہ تعالیٰ کے احکام کو تعظیم کے ساتھ بجالانا اور اللہ تعالیٰ کی عظمت و کبریائی کو ہر وقت پیش نظر رکھنا‘‘ ٭ آپ نے توحید وجودی کی وضاحت نہایت جامع انداز میں کی ہے۔ فرماتے ہیں: ’’جب ہم اپنی کھال سے باہر آئے (جسمانی وجود سے باہر آکر روح کے ذریعہ مشاہدات کی دنیا میں آئے) اور ہم نے نگاہ کی تو عاشق، معشوق اور عشق کو ایک دیکھا، یعنی عالم توحید میں سب ایک ہیں‘‘۔ (سیر الاولیاء)

TOPPOPULARRECENT