Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / خود روزگار اسکیم ، درخواست کی تاریخ میں توسیع کا مطالبہ : ایس کے افضل الدین

خود روزگار اسکیم ، درخواست کی تاریخ میں توسیع کا مطالبہ : ایس کے افضل الدین

حیدرآباد ۔ 13 ۔ مارچ : ( پریس نوٹ ) : سرکاری ترجمان تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی جناب ایس کے افضل الدین نے اقلیتی بیروزگار نوجوانوں کو خود روزگار کے لیے ماینارٹیز فینانس کارپوریشن کے ذریعہ بینکوں سے قرضہ جات کی منظوری کے اعلان کو دیر آئد درست آئید قرار دیتے ہوئے کہا کہ جہاں ٹی آر ایس حکومت نے اقلیتوں کے لیے اس تحفہ کا اعلان کیا ہے وہیں اس کو ناقابل حصول بھی بنادیا ہے ۔ جس طرح شادی مبارک اسکیم کے لیے دل خوش کن اعلان کیا گیا ہے مگر اس پر عمل آوری ناممکن بنادی گئی ہے اور اقلیتوں کو صرف زبانی اعلانات پر ہی خوش کیا جارہا ہے ۔ جناب ایس کے افضل الدین نے جو ماینارٹیز فینانس کارپوریشن کے ڈائرکٹر بھی رہ چکے ہیں کہا کہ کاغذ پر تو یہ اسکیم بہت ہی دلکش اور خوب صورت دکھائی دیتی ہے لیکن عملی طور پر بے فیض ہے ۔ انہوں نے سوال کیا کہ ٹی آر ایس حکومت نے برسر اقتدار آنے کے بعد نو ماہ کی مدت گزرجانے کے باوجود اقلیتوں کے لیے کیا کوئی ٹھوس کارروائی کی ہے ، یا کسی اردو داں ملازم کا تقرر کیا ہے ، کیا کنٹراکٹ ملازمین کو باقاعدہ بنانے کے معاملہ میں کوئی کارروائی کی ہے یا تقررات پر سے امتناع برخاست کیا ہے جو کہ این ٹی آر کے دور سے نافذ ہے اور تمام حکومتیں اسی پر عمل کررہی ہیں ۔ صرف چند محکموں میں ہی ضرورت محسوس ہونے پر تقررات کیے جارہے ہیں ۔ کیا چیف منسٹر ریلیف فنڈ سے کسی کو امداد منظور کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اقلیتوں کے تعلق سے ہی نہیں بلکہ عوام کے تعلق سے ہی کوئی دلچسپی نہیں رکھتی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ قرض کی درخواست داخل کرنے کی تاریخ کو 27 مارچ سے بڑھاکر اس میں کم از کم تین ماہ کی توسیع کی جائے تاکہ اقلیتیں اس اسکیم سے مناسب استفادہ کرسکیں اور درخواستیں بینکوں کو روانہ کرنے سے قبل بینکرز کا اعلیٰ سطح کا اجلاس چیف سکریٹری یا چیف منسٹر خود طلب کریں کیوں کہ بینکوں کا رویہ انتہائی معاندانہ ہے ۔ اب تک اقلیتوں کی پانچ فیصد درخواستیں بھی بینک منظور نہیں کرتے جو کہ انتہائی قابل افسوس بات ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT