Friday , January 19 2018
Home / شہر کی خبریں / دائرۃ المعارف کو 13کروڑ روپئے جاری کرنے مرکز کا اتفاق

دائرۃ المعارف کو 13کروڑ روپئے جاری کرنے مرکز کا اتفاق

حیدرآباد۔ 18 ۔ فروری (سیاست نیوز) مرکزی وزارت اقلیتی امور نے دائرۃ المعارف عثمانیہ یونیورسٹی میں نادر مخطوطات اور کتابوں کے ڈیجیٹلائیزیشن و پرنٹنگ کیلئے 13 کروڑ روپئے مختص کرنے سے اتفاق کیا ہے۔ یہ رقم مرکزی اسکیم ’’ہماری دروہر‘‘ کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں چار مرحلوں میں جاری کی جائے گی ۔ مرکزی وزارت اقلیتی امور کے سکریٹری ڈاکٹر

حیدرآباد۔ 18 ۔ فروری (سیاست نیوز) مرکزی وزارت اقلیتی امور نے دائرۃ المعارف عثمانیہ یونیورسٹی میں نادر مخطوطات اور کتابوں کے ڈیجیٹلائیزیشن و پرنٹنگ کیلئے 13 کروڑ روپئے مختص کرنے سے اتفاق کیا ہے۔ یہ رقم مرکزی اسکیم ’’ہماری دروہر‘‘ کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں چار مرحلوں میں جاری کی جائے گی ۔ مرکزی وزارت اقلیتی امور کے سکریٹری ڈاکٹر اروند مایا رام نے آج دیگر مرکزی عہدیداروں کے ہمراہ دائرۃ المعارف کا دورہ کیا۔ انہوں نے دائرۃ المعارف کی سرگرمیوں کو وسعت دینے اور وہاں موجود نادر ریکارڈ کو عوام کیلئے دستیاب کرنے کی تجویز پیش کی۔ ان کے ہمراہ جوائنٹ سکریٹری حکومت ہند راکیش موہن ، انڈر سکریٹری پی کے شرما اور سنٹرل وقف کونسل کے سکریٹری علی احمد خاں موجود تھے۔ ریاستی اقلیتی بہبود کے عہدیدار سید عمر جلیل ، جلال الدین اکبر ، پروفیسر ایس اے شکور اور ڈائرکٹر دائرۃ المعارف ڈاکٹر مصطفیٰ شریف نے مرکزی ٹیم کو دائرۃ المعارف کا معائنہ کرایا۔ اروند مایارام نے کہا کہ وہ دائرۃ المعارف سے کافی متاثر ہیں کیونکہ ان کی شریک حیات نے بحیثیت اسکالر اس ادارہ کا دورہ کیا تھا۔ انہوں نے ادارہ میں موجود گیتا کے عربی ترجمہ کے نسخہ کا مشاہدہ کیا۔

انہوں نے سکریٹری اقلیتی بہبود کو ہدایت دی کہ وہ مرکزی فنڈس کے حصول کے سلسلہ میں تجاویز روانہ کریں۔ انہیں بتایا گیا کہ 13 کروڑ روپئے پر مشتمل اسکیم تیار کی گئی ہے جسے اندرون ایک ہفتہ مرکز کو روانہ کردیا جائے گا۔ مرکزی ٹیم نے دائرۃ المعارف کے مختلف شعبوں جیسے ایڈیٹنگ ، کمپوزنگ ، پرنٹنگ ، بینڈنگ کا معائنہ کرتے ہوئے اسے عصری بنانے کی ضرورت ظاہر کی۔ انہوں نے موجودہ عمارت کی تزئین نو اور اسکالرس کیلئے نئی عمارت کی تعمیر اور سمینار اور سمپوزیم کیلئے آڈیٹوریم کی تعمیر کو ناگزیر قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ دائرۃ المعارف کی مطبوعات کی تفصیل انگریزی میں بھی ہونی چاہئے تاکہ غیر عربی داں افراد کو ان کی اہمیت و افادیت معلوم ہوسکے ۔ انہوں نے علامہ رازی کی تصنیف کو انگریزی اور ہندی میں شائع کرنے کی تجویز پیش کی۔ سنٹرل ٹیم نے کہا کہ تمام مطبوعات کو انٹرنیٹ پر ای بک کی شکل میں پیش کیا جائے تاکہ عالمی سطح پر استفادہ کیا جائے۔ پروفیسر مصطفی شریف اور پروفیسر عبدالمجید اور دیگر افراد نے دائرۃ المعارف کے ملازمین کے مسائل پیش کئے۔ اسپیشل سکریٹری اقلیتی بہبود نے ملازمین کے مسائل کی یکسوئی کا تیقن دیا۔

TOPPOPULARRECENT