Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / دائیں بازو کے دہشت گرد مقدمات پر نظر ثانی کا منصوبہ نہیں

دائیں بازو کے دہشت گرد مقدمات پر نظر ثانی کا منصوبہ نہیں

مرکزی حکومت کا ادعا ۔ مقدمات میںنرمی برتی جارہی ہے ۔ کانگریس کا الزام
ڈائرکٹر این آئی اے کا تبادلہ کردینے اپوزیشن جماعت کا مطالبہ

نئی دہلی 22 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت نے آج واضح کیا کہ اس کا دائیں بازو کے گروپس کے رول والے دہشت گردی کے مقدمات پر نظر ثانی کا کوئی منصوبہ نہیںہے اور اس طرح کے امور عدالتوں اور این آئی اے ( قومی تحقیقاتی ایجنسی ) کے مابین ہے ۔ یہی ایجنسی ان مقدمات کی تحقیقات کریگی ۔ ایک سینئر عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ اس طرح کے مقدمات عدالتوں میں ہیں اور ان میں حکومتوں کا کوئی رول نہیں ہے ۔ انہوں نے کسی بھی مقدمہ میں تازہ تحقیقات کا حکم دئے جانے کا امکان بھی مسترد کردیا ۔ دائیں بازو کے کیڈر کے رول والے دہشت گردانہ مقدمات میں 2007 کا سمجھوتہ ایکسپریس ٹرین کا بم دھماکہ اور 2008 کے مالیگاوں دھماکے شامل ہیں۔

عہدیدار نے کہا کہ ایک ملزم لیفٹننٹ کرنل پرساد سریکانت پروہت کی شریک حیات نے شکایت کی تھی کہ تحقیقات کے دوران اس کے شوہر کے ساتھ غیر منصفانہ سلوک کیا گیا ہے ۔ یہ مسئلہ این آئی اے کے پاس ہے اور اگر وہ اس سے مطمئن نہیں ہے تو وہ وزارت داخلہ سے رجوع ہوسکتی ہے تاکہ اس کی شکایت کا ازالہ ہوسکے ۔ عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ لیفٹننٹ کرنل پروہت کے خلاف چارچ شیٹ 2008 مالیگاوں مقدمہ میں داخل کی گئی ہے ۔ مالیگاوں مہاراشٹرا میںایک دھماکہ ہوا تھا جس میں چار افراد ہلاک اور کئی دوسرے زخمی ہوئے تھے ۔ اس کیس میں تحقیقات پہلے مہاراشٹرا انسداد دہشت گردی دستہ کی جانب سے کی گئی تھی جسے بعد میں این آئی اے کے سپرد کردیا گیا تھا ۔ اس دوران کانگریس نے ہندو دہشت گرد گروپس کے مقدمات میں نرمی برتنے کے الزامات پر تنازعہ کے دوران مطالبہ کیا کہ این آئی اے کے ڈائرکٹر جنرل کو بدل دیا جانا چاہئے ۔ پارٹی نے مطالبہ کیا ہے کہ این آئی اے کی جانب سے جن معاملات کی تحقیقات کی جا رہی ہیںانہیں سپریم کورٹ سے رجوع کردیا جائے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ تحقیقاتی ایجنسی پر کوئی دباؤ نہ بنے ۔ پارٹی ترجمان اجوئے کمار نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جس وقت سے مودی حکومت اقتدار پر آئی ہے ہم دیکھ رہے ہیں کہ گواہ منحرف ہو رہے ہیں۔ چاہے یہ سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ ہو ‘ اجمیر دھماکہ ہو یا پھر مالیگاوں دھماکے ہوں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ این آئی اے کے ڈائرکٹر جنرل کا تبادلہ کردیا جانا چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT