Thursday , November 23 2017
Home / دنیا / داعش میں شامل یورپی جنگجوؤں کی اکثریت اسلام سے نابلد

داعش میں شامل یورپی جنگجوؤں کی اکثریت اسلام سے نابلد

واشنگٹن ۔ 18 اگست (سیاست ڈاٹ کام) عالمی ذرائع ابلاغ میں آنے والی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ عراق اور شام سمیت دنیا کے کئی دوسرے ملکوں میں اسلامی خلافت کے قیام کی دعوے دار سخت گیر تنظیم دولت اسلامی ’داعش‘ میں شامل بیشتر جنگجو اسلام اور شریعت کی بنیادی تعلیمات سے بھی نابلد ہیں۔امریکی اخبار “نیویارک پوسٹ” نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ یورپی ملکوں سے داعش میں شامل ہونے کے خواہش مند افراد نہ صرف یہ کہ اسلامی تعلیمات سے ناواقف ہوتے ہیں بلکہ وہ داعش کے کلچر اور طریقہ واردات سے بھی اچھی طرح آگاہ نہیں ہوتے۔ ان کا علم آن لائن دستیاب اس لٹریچر تک محدود ہوتا ہے جس میں مخصوص انداز میں اسلام کی تعبیر پیش کی گئی ہے۔ زیادہ تر جنگجو انٹرنیٹ پر دستیاب ’اسلام بے وقوفوں کے لیے‘ جیسی کتابوں کا سہارا لیتے ہیں۔ خبر رساں ادارے’ ایسوسی ایٹڈ پریس‘ کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ماہرین نے داعش کے قبضے سے حاصل ہونے والی 3000 دستاویزات کا جائزہ لیا جس سے یہ معلوم ہوا کہ داعش کی صفوں میں شامل ہونے والے نئے جنگجوؤں کی 70 فی صد تعداد اسلام کی بنیادی تعلیمات سے بھی ناواقف ہوتی ہے۔ داعش کی صفوں میں رہنے کے بعد یورپی ملکوں میں واپسی پر گرفتار ہونے والے جنگجوؤں نے اعتراف کیا کہ وہ اسلام کے بارے میں جان کاری حاصل کرنے کی خاطر ’’ایمازون‘‘ ویب سائیٹس سے کتب خریدتے رہے ہیں۔ انہوں نے اسلام کے بارے میں معلومات انٹرنیٹ سے حاصل ہونے والی کتب سے حاصل کیں۔ متعدد سابق جنگجوؤں نے کہا کہ وہ داعش کے طریقہ کار اور اس کے کلچر سے بھی اچھی طرح واقف نہیں تھے۔ بعض جنگجو داعش کے زیرقبضہ علاقوں میں پرسکون زندگی گذارنے کے دعوؤں کی بنیاد پر تنظیم میں شامل ہوئے۔ بعض جنگجو صرف اس لیے داعش کا حصہ بنے کیونکہ وہ شامی حکومت کے خلاف برسرپیکار ہے۔

TOPPOPULARRECENT