Monday , December 11 2017
Home / ہندوستان / داؤد کی بیوی پر حکومت موقف واضح کرے :کانگریس

داؤد کی بیوی پر حکومت موقف واضح کرے :کانگریس

 

نئی دہلی، 23ستمبر (سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج کہا کہ انڈرورلڈ ڈان داؤد ابراہیم کی بیوی ممبئی آئی تھی اور کسی کو اس کی بھنک نہیں لگی تو یہ سنگین معاملہ ہے اور مرکز او رمہاراشٹرا حکومت کو اس سلسلے میں موقف واضح کرنا چاہئے ۔کانگریس کے ترجمان راجیو شکلا نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ میڈیا میں خبر ہے کہ داؤد کی بیوی مہ جبیں شیخ گذشتہ سال ہندوستان آئی تھی اورممبئی میں پندرہ دن تک رہنے کے بعد خاموشی سے لوٹ گئی۔ وہ اپنے والد سے ملاقات کے لئے آئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اگر خبر درست ہے تو یہ معاملہ نہایت سنگین ہے اور حکومت کو بتانا چاہئے کہ اس کی خفیہ ایجنسیاں کیا کررہی تھیں۔انہوں نے کہا کہ پورا ملک دہشت گردی کی جنگ لڑ رہا ہے اور ایک دہشت گرد کی بیوی ملک میں آکر دو ہفتے تک رہتی ہے اور اس کے باوجود کسی کو بھنک لگے بغیر لوٹ جاتی ہے تو یہ دہشت گردی کے خلاف ہماری لڑائی پر بھی سوال اٹھتا ہے ، اس لئے حکومت کو اس ضمن میں جواب دینا چاہئے ۔اس دوران کانگریس میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے بھی ٹوئٹ کرکے اس پر حکومت سے جواب دینے کے لئے کہا ہے ۔ سرجے والا نے کہا کہ بدنام زمانہ داؤد ابراہیم کی بیوی مہ جبیں سرعام 2016میں بی جے پی حکومت کے ناک کے نیچے ممبئی آئی اور چلی گئی ۔ کیا مودی سرکار سو رہی تھی؟ جواب دیں؟چند روز قبل ایم این ایس لیڈر راج ٹھاکرے اور ماضی میں سماج وادی پارٹی لیڈر اعظم خاں بھی داؤد ابراہیم کے تعلق سے مودی حکومت کی مشکوک پالیسی پر تنقید کرچکے ہیں۔راج ٹھاکرے نے کہاکہ مرکز داؤد کو واپس لانے کیلئے فکسنگ کررہا ہے۔

اقلیتوں کی تعلیمی ترقی کیلئے جدوجہد ضروری:ممبئی پولیس کمشنر
ممبئی23ستمبر(سیاست ڈاٹ کام )مسلمانوں کی تعلیمی میدان میں ترقی وفروغ کیلئے جدوجہد انتہائی ضروری ہے اور اس کے لیے مسلم رہنماؤں اور سیاست دانوں کے ساتھ ساتھ علمائے کرام کو بھی اہم رول ادا کرنا ہوگا۔ممبئی کے پولیس کمشنر دتا جی پڈسالگیکر نے گزشتہ شب جنوبی ممبئی کے اسلام جمخانہ میں منعقد تعلیمی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ۔ اس جلسہ کا انعقاد سیوا نامی تنظیم نے کیا ۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں تیزی سے تعلیمی ترقی ہورہی ہے اور ٹیکنالوجی کی ترقی نے کئی مراحل کو آسان بنادیا ہے ،صرف تعاون اور حمایت کی ضرورت ہے۔پولیس کمشنر نے یقین دلایا کہ شہر میں اور خاص طورپر مسلم اکثریتی علاقوں میں منشیات مافیا کو زیر کرنے کیلئے پولیس نے مقامی لوگوں کے تعاون سے بھر پور کارروائی کی ہے ،اس کیلئے انہوں نے سیوا کے روح رواں اور سابق ایم ایل اے ایڈوکیٹ یوسف ابراہانی اور مولانا معین اشرف کی کوششوںکو سراہا۔

TOPPOPULARRECENT