Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / ’داڑھی مونڈھنا، غیراسلامی عمل‘ : دیوبند کا فتویٰ

’داڑھی مونڈھنا، غیراسلامی عمل‘ : دیوبند کا فتویٰ

لکھنؤ ۔ 7 اگست (سیاست ڈاٹ کام) دارالعلوم دیوبند نے ایک فتویٰ جاری کرتے ہوئے داڑھی مونڈھنے کو غیراسلامی عمل قرار دیا جس کے نتیجہ میں مسلم طبقہ سے تعلق رکھنے والے ان حجاموں کے علاوہ داڑھی نہ رکھنے والے مسلمانوں کو الجھن پیدا ہوگئی ہے۔ سہارنپور کے محمد ارشاد اور محمد فرقان نے دارالعلوم دیوبند سے اس مسئلہ پر سوال کرتے ہوئے فتویٰ کی درخواست کی تھی۔ یہ دونوں حجام باجیہ الحق کالونی میں سالون چلاتے ہیں اور دونوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ اپنے گاہکوں کی داڑھی نہیں مونڈھیں گے اور نہ ہی داڑھیاں چھوٹی کی جائیں گی۔ تین مفتیوں فخرالاسلام، وقار علی اور زین القاسمی پر مشتمل پیانل کی طرف سے جاری فتویٰ میں کہا گیا ہیکہ ’’داڑھی مونڈھنا غیراسلامی ہے اور اسلامی قوانین شریعت میں اس کی اجازت نہیں ہے۔ اسلامی دستور ہمیں کسی بھی مذہب کے کسی بھی شخص کی داڑھی مونڈھنے کی اجازت نہیں دیتا‘‘۔ فتویٰ میں مزید کہا گیا ہیکہ حجامت کے پیشہ سے وابستہ افراد اس پیشہ کے بجائے کوئی دوسرا روزگار تلاش کرنے کی کوشش کریں۔

TOPPOPULARRECENT